حوثیوں کا بحیرہ احمر میں دو امریکی جنگی بحری جہازوں پر حملوں کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن کے ایرانی حمایت یافتہ حوثی گروپ نے منگل کے روز دعویٰ کیا ہے کہ اس نے بحیرہ احمر میں دو امریکی ڈسٹرائر جہازوں پر حملے کیے ہیں۔

حوثیوں نے آج ایک بیان میں کہا کہ انھوں نے گزشتہ 72 گھنٹوں کے دوران خلیج عدن اور بحیرہ احمر میں 4 بحری جہازوں پر حملے کیے ہیں۔

گروپ کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اس نے "گذشتہ 72 گھنٹوں کے دوران متعدد بیلسٹک میزائلوں اور ڈرونز کے ساتھ چھ فوجی کارروائیاں کیں، جن میں خلیج عدن اور بحیرہ احمر میں چار بحری جہازوں اور دو فوجی ڈسٹرائر جہازوں کو نشانہ بنایا۔ اس کے علاوہ اسرائیل میں ام رشراش بندر گاہ پرمتعدد اہداف کو نشانہ بنایا۔

بیان میں وضاحت کی گئی ہے کہ گروپ نے چار مشترکہ کارروائیوں میں چار بحری جہازوں کو نشانہ بنایا، جن میں خلیج عدن میں امریکی جہاز MAERSK SARATOGA، بحیرہ احمر میں امریکی جہاز APL DETROIT، بحیرہ احمر میں برطانوی جہاز HUANG PU اور حوثیوں کے بیان کے مطابق پریٹی لیڈی جہاز جو اسرائیلی بندرگاہوں کی طرف جا رہا تھا کو نشانہ بنایا گیا۔

یہ دعویٰ اس وقت سامنے آیا ہے جب اتوارکی صبح امریکی فوج نے اعلان کیا تھا کہ حوثی باغیوں نے ہفتے کے روز ایک چینی آئل ٹینکر پر بیلسٹک میزائلوں سے حملہ کیا، جن میں سے ایک یمن کے ساحل کے قریب جہاز سے ٹکرا گیا جہاں گروپ کے حملے بڑھ رہے ہیں۔

حوثی گروپ جو بحیرہ احمر کے ساحل یمن کے ساحل کے ایک بڑے حصے پر قابض ہے، نے گزشتہ چار ماہ کے دوران تجارتی بحری جہازوں پر میزائلوں اور ڈرونز سے درجنوں حملے کیے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں