عورت کی آواز کا پردہ نہیں : سابق مفتی مصر علی جمعه نے نئی بحث چھیڑ دی

مصر کے سابق مفتی ڈاکٹر علی جمعہ نے ایک طالب علم کے سوال کا جواب دیا کہ وہ کچھ لڑکیوں کو اس بنیاد پر مذہبی گانے سے کیوں روکتے ہیں کہ عورت کی آواز چھپانے کی چیز ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کے سابق مفتی ڈاکٹر علی جمعہ نے ایک طالب علم کے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ وہ کچھ لڑکیوں کو اس بنیاد پر مذہبی گانے سے کیوں روکتے ہیں کہ عورت کی آواز کا پردہ ہے؟

ڈاکٹر علی جمعہ نے مصری چینل پر نشر ہونے والے ایک پروگرام کے دوران سوالوں کے جواب دیتے ہوئے کہا کہ "کس نے کہا کہ عورت کی آواز چھپانے کی چیز ہے؟ کیا آپ نے یہ سنا؟

نہیں، عورت کی آواز کا پردہ نہیں ہے۔

متنازعہ فتوے ۔

واضح رہے کا ڈاکٹر جمعہ نے پچھلی اقساط میں کئی ایسے فتوے دیئے تھے جن پر کئی حلقوں سے تنقید کی گئی اور تنازعہ کھڑا ہوا تھا۔ ان میں یہ بھی شامل تھا کہ جنت صرف مسلمانوں تک محدود نہیں ہے، اور یہ کہ دوسرے مذاہب کے لوگ بھی جنت میں داخل ہوں گے، اور انہوں نے قرآن کی ایک آیت کے ذریعے اس کی وضاحت کی۔

انہوں نے قیس اور لیلیٰ کی طرح شادی سے پہلے کی محبت کے بارے میں رائے دیتے ہوئے کہا: "جب قیس نے لیلیٰ سے شادی کی تو اس نے تمام پیار، محبت اور اس کے بارے میں گائے ہوئے اشعار کے بعد اسے طلاق دے دی۔"


"محبت میں حلال یا حرام نہیں ہوتا"

ایک اور پروگرام میں انہوں نے کہا کہ محبت جائز یا حرام نہیں ہوتی ہے، کیونکہ یہ دل کا احساس ہے جس پہ ہمارا اختیار نہیں ہے۔

جہاں تک محبت کے بعد نکاح کا معاملہ ہے تو یہ اور بات ہے۔ لیکن ایسی محبت کے معاملے میں صرف ایک چیز کی ضرورت ہوتی ہے، وہ ہے عفت۔

ان سے نوجوانی کے دوران جنسی تعلق اور ایک ایسے نوجوان کے بارے میں اسلامی حکم پوچھا گیا جس نے ایک لڑکی سے کہا کہ"میں تم سے محبت کرتا ہوں"، تو انہوں نے جواب دیا، "اگر اس لڑکی کے والد کو معلوم ہوتا تو یہ عام بات ہوتی۔"

جہاں تک لڑکا اور لڑکی کی دوستی کا تعلق ہے تو جمعہ نے کہا کہ جماعت میں اکٹھے نکلنا حرام نہیں ہے اور تمام انسانیت اختلاط پر مبنی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ جنس کے درمیان دوستی جائز ہے جب تک کہ اس میں عفت ہو، اور عفت کی تعریف یہ ہے کہ تعلق رازداری سے پاک ہو۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں