فلسطین اسرائیل تنازع

غزہ میں 35 سالہ اسرائیلی یرغمالی ہلاک: یرغمالی خاندانوں کا نمائندہ گروپ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

یرغمالیوں کے خاندانوں کی نمائندگی کرنے والے دو گروپوں نے منگل کو بتایا کہ سات اکتوبر کو حماس کے حملے کے دوران اغوا کردہ اسرائیلی یرغمالیوں میں سے ایک ہلاک ہو گیا ہے اور اس کی لاش غزہ میں رکھی ہوئی ہے۔

دو بچوں کے والد 35 سالہ یورئیل باروچ کو سپرنووا میوزک فیسٹیول سے اغوا کیا گیا تھا جہاں غزہ میں جنگ کی وجہ بننے والے غیر معمولی حملے کے دوران حماس کے ہاتھوں 364 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

ٹکوا فورم یرغمالیوں کے گروپ نے ایک بیان میں کہا کہ اسرائیلی فوج نے ان کے اہل خانہ کو بتایا کہ اس کی لاش غزہ میں رکھی گئی تھی۔

یرغمالیوں اور لاپتہ خاندانوں کے فورم نامی ایک اور گروپ نے بھی کہا باروچ مارا گیا ہے۔

اس نے باروچ جن کے بچوں کی عمریں آٹھ اور پانچ ہیں، کو "ایک خوش کن شخص قرار دیا جو زندگی سے محبت کرتا اور مزے کرنا پسند کرتا تھا۔"

اس میں مزید کہا گیا، "یورئیل کی لاش تاحال حماس کے قبضے میں ہے۔"

نومبر کے آخر میں ایک جنگ بندی کے دوران تقریباً 100 یرغمالیوں کو رہا کیا گیا جن میں سے کچھ فلسطینی قیدیوں کے بدلے رہا ہوئے تھے۔

اسرائیل کا خیال ہے کہ غزہ میں تقریباً 130 اسیران باقی ہیں جن میں سے 34 ہلاک ہو چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں