فلسطین اسرائیل تنازع

غزہ جنگ کے بعد امریکہ کے اختیارات: ملٹی نیشنل فورس یا فلسطینی امن دستہ ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اگرچہ غزہ کی تقدیر اور حکومت یا انتظامیہ کی شکل جو کہ جنگ کے بعد اسے سنبھال سکتی ہے ،کے بارے میں ابھی غیر یقینی پائی جاتی ہے، مگر سوال یہ ہے کہ امریکہ کا اگلا لائحہ عمل کیا ہوگا۔ حال ہی میں، صدر جو بائیڈن کی انتظامیہ کے ایک اعلی اہلکار نے جنگ کے بعد غزہ کو مستحکم کرنے کے اختیارات کے بارے میں "ابتدائی بات چیت" کی ہے ۔

پولیٹیکو کی جمعرات کو رپورٹ کے مطابق، ان اختیارات میں سے ایک امریکی محکمہ دفاع کی طرف سے ایک کثیر القومی فورس یا فلسطینی امن دستے کی مالی معاونت کی تجویز ہے۔


سکیورٹی فورسز کی ضروریات

پینٹاگون کے دو اہلکار، جنہوں نے اپنی شناخت ظاہر نہیں کی، نے یہ بھی کہا کہ جن آپشنز پر غور کیا جا رہا ہے ان میں زمین پر امریکی افواج کی موجودگی شامل نہیں ہوگی۔

تاہم، حکام کے مطابق، اس کے بجائے، امریکی دفاعی فنڈز سکیورٹی فورسز کی ضروریات کے لیے دیے جائیں گے۔

اسرائیلی فوج کا ٹینک غزہ کی سرحد پر موجود اورسامے کھنڈرات نما عمارتیں
اسرائیلی فوج کا ٹینک غزہ کی سرحد پر موجود اورسامے کھنڈرات نما عمارتیں

تعمیر نو اور انفراسٹرکچر

پینٹاگون کے دونوں عہدیداروں نے وضاحت کی کہ زیرِ مطالعہ اور زیر بحث ابتدائی منصوبوں کے مطابق، امریکی محکمہ دفاع غزہ میں ان سکیورٹی فورسز کے لیے مالی امداد فراہم کرے گا۔

ان میں سے ایک نے یہ بھی کہا کہ یہ امداد تعمیر نو، انفراسٹرکچر اور دیگر ضروریات کے لیے استعمال کی جا سکتی ہے۔

ہفتے یا مہینے درکار

تبصرے کی درخواست کے جواب میں، امریکی انتظامیہ کے ایک سینئر اہلکار نے مخصوص تفصیلات فراہم کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ: " ہم غزہ میں بحران ختم ہونے پر عبوری حکمرانی اور سلامتی کے ڈھانچے کے لیے مختلف منظرناموں پر شراکت داروں کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں،"

غزہ کا منظر
غزہ کا منظر

انہوں نے مزید کہا: "ہم نے اسرائیلیوں اور اپنے شراکت داروں کے ساتھ غزہ میں اگلے دن کے لیے ضروری عناصر کے بارے میں متعدد بات چیت کی ہے جب مناسب وقت ہو گا۔"

پولیٹیکو کے مطابق، واشنگٹن اور اس کے شراکت داروں کے کسی بھی منصوبے پر اتفاق کرنے میں ہفتوں یا مہینوں کا وقت لگ سکتا ہے، خاص طور پر "چونکہ خطے کے ممالک آپشنز میں سنجیدگی سے مشغول ہونے سے پہلے دو ریاستی حل کے عزم کو دیکھنا چاہتے ہیں۔"

یہ بات قابل ذکر ہے کہ غزہ میں جنگ کے بعد کے مرحلے کے حوالے سے بین الاقوامی راہداریوں میں بہت سے منظرنامے پیش کیے گئے، جن میں غزہ کی پٹی پر حکمرانی کے لیے فلسطینی اتھارٹی کی واپسی، اس میں ترامیم کے ساتھ، اقتدار کسی ٹیکنوکریٹک حکومت کے حوالے کرنا، حتیٰ کہ سلامتی برقرار رکھنے کے لیے بین الاقوامی امن فورس کے ساتھ مصری نگرانی بھی شامل ہے۔ تاہم، ان میں سے کسی نے بھی ابھی تک بین الاقوامی اور علاقائی اتفاق رائے حاصل نہیں کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں