فلسطین اسرائیل تنازع

اسرائیل نے غزہ کےقریب ملٹری زون قرار دیے گئے کچھ علاقے کھول دیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی اخبار’یروشلم پوسٹ‘نے آج اتوار کے روز کہا ہے کہ اسرائیلی فوج نے غزہ کی پٹی کے ارد گرد کے فوجی زون قرار دیے گئے قصبوں کے کچھ حصوں کو دوبارہ کھولنے کا اعلان کیا ہے۔اخباری رپورٹ کے مطابق دوبارہ کھولے گئےعلاقوں میں غزہ کی پٹی سے ملحقہ علاقے میں ریم فاریسٹ اور کچھ زرعی علاقے شامل ہیں۔

دوسری جانب وسطی غزہ میں مغازی کیمپ کے ایک گھر پر اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں تین افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے جب کہ اسرائیلی طیاروں نے وسطی غزہ کی پٹی کے جنوبی علاقے دیر البلح پر دھاوا بول دیا۔

فلسطینی خبر رساں ایجنسی نے اطلاع دی ہے کہ اسرائیلی گاڑیاں غزہ کی پٹی کے جنوب میں خان یونس میں ملز، البرکہ اور ساحلی قرارا چوکیوں کے مضافات میں توپ خانے سے گولہ باری اور گن بوٹس سے گولہ باری کے ساتھ اندر گھس گئیں۔

غزہ میں وزارت صحت نے کل ہفتے کو اعلان کیا تھا کہ پٹی پر اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں سات اکتوبر کو جنگ کے آغاز کے بعد سے ہلاکتوں کی تعداد 32,705 جب کہ زخمیوں کی تعداد 75,190 تک پہنچ گئی ہے۔

غزہ کی پٹی میں سرکاری میڈیا کے دفتر نے ہفتے کے روز ایک بیان میں اعلان کیا کہ کمپلیکس پر دھاوے کے 13 دنوں کے اندر الشفا ہسپتال کے اندر اور اس کے آس پاس 400 سے زائد افراد ہلاک اور سینکڑوں کو گرفتار کر لیا گیا۔

انہوں نے وضاحت کی کہ 107 مریض اب بھی اس کمپلیکس کے اندر موجود ہیں جس کا اسرائیلی فوج نے محاصرہ کر رکھا ہے۔ ان مریضوں کے بارے میں تفصیلات ہفتے کے روز فلسطینی وزارت صحت نے جاری کی تھیں۔

وزارت صحت نے کہا کہ محصور افراد "انسانی وسائل کی ترقی کی عمارت میں غیر انسانی حالات میں پانی، بجلی یا دوائی کے بغیر پھنسے ہیں اور ان میں 60 طبی عملے کے علاوہ 30 معذور مریض بھی شامل ہیں"۔

غزہ میں وزارت صحت نے خبردار کیا کہ ان مریضوں کی زندگیاں "سنگین خطرے میں" ہیں اور انہوں نے ہر ایک سے اپنی جان بچانے کے لیے فوری اقدام کرنے کا مطالبہ کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں