سعودی عرب: رشوت اور اختیار کا غلط استعمال، 146سرکاری ملازمین گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب میں نگرانی اور انسداد بدعنوانی اتھارٹی "نزاہہ" نے مارچ کے مہینے کے دوران 239 ملزموں سے متعدد فوجداری اور انتظامی مقدمات میں تفتیش کی ۔ ان مقدمات میں رشوت خوری، اختیارات کا غلط استعمال، جعلسازی اور منی لانڈرنگ کے جرائم شامل تھے۔

وزارت داخلہ اور دفاع سمیت آٹھ سرکاری اداروں میں کام کرنے والے 146 مدعا علیہان کی گرفتاری عمل میں لائی گئی۔ وزارتِ انصاف، وزارتِ نیشنل گارڈ، تعلیم، صحت، میونسپلٹی و دیہی امور اور زکوٰۃ و ٹیکس کے محکموں کے ملازمین بھی گرفتار ہونے والوں میں شامل تھے۔

ساتھ ہی ’’ نزاہہ ‘‘ نے گرفتار کیے گئے متعدد افراد کو رہا بھی کر دیا۔ انیہں ضمانت داروں کی ضمانت پر رہا کیا گیا۔ "نزاہہ" نے ایک بیان جاری کیا اور بتایا کہ مارچ 2024 کے دوران سلامتی کے تحفظ، شفافیت کے اصول کی پاسداری اور مالی اور انتظامی بدعنوانی سے نمٹنے کے لیے لگ بھگ 1657 واقعات کی نگرانی کی گئی۔ گزشتہ ماہ "نزاہہ" نے 3,209 نگرانی کی کارروائیاں کرکے 288 مشتبہ افراد سے تفتیش کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں