فلسطین اسرائیل تنازع

غزہ میں جنگ بندی کی نگرانی کے لیے اقوام متحدہ کے مشن کو قبول نہیں کرتے:حماس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اگرچہ غزہ کی پٹی میں جنگ بندی اور اسرائیل اور حماس کے درمیان قیدیوں کے تبادلے پر ہونے والے مذاکرات کا انجام نامعلوم ہے۔ حماس نے کہا ہے کہ وہ جنگ بندی کی نگرانی کرنے والے اقوام متحدہ کے عناصر کی موجودگی کو قبول نہیں کرے گی۔

تاہم تحریک کے ایک رہ نما عزت الرشق نے وضاحت کی کہ حماس نے محصورغزہ کی پٹی کے لوگوں کو امداد اور ریلیف پہنچانے کے لیے بین الاقوامی تنظیموں خاص طور پر ’اونروا‘ کی موجودگی کا مطالبہ کیا۔

ضامن ممالک

جنگ بندی پر سمجھوتے تک پہنچنے کی صورت میں انہوں نے نشاندہی کی کہ ایسے ممالک کی ضرورت ہے جو اس کی ضمانت دیں اور اس کے لیے اسرائیل کے عزم کی ضمانت دیں کہ وہ جنگ بندی کی پاسداری کرے گا نہ کہ اس کی نگرانی کے لیے اپنے اہلکاروں کا تقرر کرے۔

غزہ میں بڑے پیمانے پر تباہی
غزہ میں بڑے پیمانے پر تباہی

انہوں نے مزید کہا کہ فلسطینی اپنی سرزمین پر کسی بھی غیر فلسطینی گروپ کی موجودگی کو مسترد کرتے ہیں۔

یہ بیانات ایک ایسے وقت میں سامنے آئے ہیں جب یہ اطلاع دی گئی تھی کہ غزہ میں وزارت داخلہ نے مغربی کنارے میں فلسطینی انٹیلی جنس سروس سے وابستہ ایک سکیورٹی فورس کے ارکان کو گرفتار کیا ہے۔

ایک سرکاری فلسطینی ذریعے نے ان میڈیا رپورٹس کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ یہ سکیورٹی اہلکاروں کی گرفتاری کی خبریں بے بنیاد ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں