فلسطین اسرائیل تنازع

سعودی عرب کی طرف سے غزہ میں جنگ زدہ لوگوں کے لیے 50 لاکھ ڈالر کا خوراک پروگرام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب کی طرف سے غزہ کی پٹی میں جنگ سے تباہ حال شہریوں کی امداد کے لیے فراخدلانہ امداد کی فراہمی کو یقینی بنایا جا رہا ہے۔

شاہ سلمان ہیومینٹیرین ایڈ اینڈ ریلیف سینٹر کے جنرل سپروائزر ڈاکٹر عبداللہ الربیعہ نے ورلڈ فوڈ پروگرام کے ساتھ مشترکہ تعاون کے معاہدے پر دستخط کیے۔ اس معاہدے کے تحت سعودی عرب غزہ کی پٹی میں جنگ سے متاثرہ افراد کو خوراک کی فراہمی کے لیے 5 ملین ڈالر کی رقم صرف کرے گا۔ معاہدے کے بعد غزہ کی پٹی میں مستحقین کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے تیار شدہ اشیائے خوردونوش تقسیم کی جائے گی اور اس پروگرام سے تقریباً 377,855 بے گھر افراد کو فائدہ پہنچےگا۔

غزہ کی پٹی میں انسانی بحران کے آغاز کے بعد سے مملکت نے غزہ کی پٹی میں فلسطینی عوام کو ریلیف فراہم کرنے کے لیے "ساہم" پلیٹ فارم کے ذریعے ایک عوامی مہم چلانے کی ہدایت کی ہے اور ساتھ ہی ایک ہوائی پل چلانے کی ہدایت کی ہے جس کےتحت اب تک غزہ کی پٹی کےعوام کے لیے خوراک سے لدے 44 طیارے مصر بھییجے جا چکے ہیں۔ ان طیاروں میں خوراک اور دیگر بنیادی ضروریات پر مشتمل 829 ٹن سے زیادہ سامان بھییجا گیا۔ اس کےعلاوہ 20 ایمبولینسز ، بنیادی طبی آلات اور دیگر اشیاء شامل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں