امدادی کارکنوں کی ہلاکتیں افسوسناک ہیں،اسرائیل طریقہ کار تبدیل کرے:امریکہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

غزہ میں اسرائیلی فضائی حملے میں ورلڈ سینٹرل کچن آرگنائزیشن کے 7 امدادی کارکنوں کی ہلاکت کے بعد ایک امریکی اہلکار نے انکشاف کیا کہ امریکہ نے اسرائیلی فوج اور حکومت کے ارکان سے امداد کے مقامات کے طریقہ کار میں تبدیلی کا مطالبہ کیا ہےتاکہ پٹی میں امدادی کارکن پرعزم اور محفوظ رہیں۔

’سی این این‘ کے مطابق اہلکار نے مزید کہا کہ امریکی صدر جو بائیڈن بھی اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو کے ساتھ فون کال کے دوران اس نکتے کو اٹھانے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ "یا تو انہیں قافلے (ورلڈ سنٹرل کچن کے) کے ٹھکانے کے بارے میں معلومات نہیں ملی یا انہوں نے اسے نظر انداز کر دیا۔ یہ دونوں صورتوں میں ایک مسئلہ ہے"۔

"ایک بہت بڑی غلطی"

قابل ذکر ہے کہ اسرائیلی فوج نے اس سے قبل اعتراف کیا تھا کہ اس نے پیر کی رات غزہ میں فضائی حملہ کر کے ایک "سنگین غلطی" کی تھی، جس کے نتیجے میں "ورلڈ سینٹرل کچن" کے امدادی کارکن مارے گئے تھے۔

اسرائیلی چیف آف اسٹاف جنرل ہرزی ہیلیوی نے ایک ویڈیو پیغام میں کہا کہ یہ واقعہ ایک سنگین غلطی تھی۔

انہوں نے مزید کہا کہ جو کچھ ہوا وہ "ایک غلطی تھی جو ایک غلط شناخت کے عمل کے بعد ہوئی جو رات کے وقت، جنگ کے دوران، بہت پیچیدہ حالات میں ہوئی تھی۔ (یہ غلطی) نہیں ہونی چاہیے تھی"۔

انہوں نے مزید کہا کہ "ایک آزاد ادارہ اس وا قعے کی گہرائی سے تحقیقات کرے گا اور آنے والے دنوں میں اس کے نتائج کا اعلان کیا جائے گا"۔

بائیڈن کی اسرائیل پر تنقید

جب کہ بائیڈن نے چھاپے کے لیے اسرائیل پر کڑی تنقید کی اور اس بات پر زور دیا کہ اس نے ان رضاکاروں کی حفاظت کے لیے "کچھ نہیں کیا"۔ یہ امدادی کارکن بھوکے فلسطینیوں کے لیے مدد کا ہاتھ بڑھاتے ہیں۔

انہوں نے ایک سخت الفاظ میں بیان میں کہا کہ پٹی میں امداد کی تقسیم مشکل ہے "کیونکہ اسرائیل نے امدادی کارکنوں کی حفاظت کے لیے خاطر خواہ اقدامات نہیں کیے ہیں جو شہریوں کو مدد فراہم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں جنہیں اس کی اشد ضرورت ہے"۔

انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ "پیر کو پیش آنے والے واقعات جیسے واقعات نہیں ہونے چاہئیں۔ اسرائیل نے بھی شہریوں کے تحفظ کے لیے خاطر خواہ اقدامات نہیں کیے ہیں"۔

خیال رہے کہ سوموار کی رات اسرائیلی فوج نے غزہ میں ایک گاڑی کو نشانہ بنایا جس میں برطانیہ اور پولینڈ کے امدادی کارکن سوار تھے۔ اس حملے میں امدادی کارکنوں سمیت پانچ افراد مارے گئے تھے جس کے بعد اسرائیل کو عالمی سطح پر سخت تنقید اور دباؤ کا سامنا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں