فلسطین اسرائیل تنازع

سپین کی 'اوپن آرمز' کا غزہ میں فلسطینیوں کے لیے خوراک آپریشن معطل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سپین کی این جی او 'اوپن آرمز' نے اپنا جہاز فراہم کرنے کی سہولت معطل کر دی ہے۔ قبرص کی بندرگاہ کے راستے غزہ کے لیے پہنچائے جانے والی امداد اور خوراک اسرائیلی کی بمباری کی باعث عملاً رک کر رہ گئی ہے۔

پیر کے روز امریکی 'ورلڈ سینٹرل کچن' سے وابستہ سات کارکنوں کو اسرائیلی فوج نے بمباری کر رکے ہلاک کر دیا تھا۔ اب ان کی لاشیں بھی ان کے ملکوں کی طرف روانہ کر دی گئی ہیں۔ ان ملکوں میں کینیڈا، آسٹریلیا، پولینڈ ، برطانیہ اور امریکہ شامل ہیں۔سب کی طرف سے سخت ردعمل ظاہر کیا گیا ہے۔

تاہم امریکی صدر کی طرف سے اس بارے میں یہ کہنا کہ ان کا دل ٹوٹ گیا ہے۔ اسرائیل کی حمایت میں کسی قسم کی کمی نہ کرنے کا کہا ہے۔

غزہ کے بھوک اور قحط سے مرنے والے فلسطینیوں کے لیے امریکی ادارے 'ورلڈ سنیٹرل کچن' نے بھی اپنا آپریشن معطل کر دیا ہے۔ یوں بحری راستے سے غزہ میں پہنچنے والی خوراک اور امداد کا راستہ اسرائیل نے ایک فلسطینی سمیت سات امدادی کارکنوں کو ہلاک کر کے بند کر دیا ہے۔

سپین کی این جی او 'اوپن آرمز' کے ڈائریکٹر آسکر کیمپ نے کہا ہے کہ 'ہم اس ناقابل قبول اسرائیلی حملے کا جواب طلب کریں گے۔' اب تک کئی بڑے امدادی گروپ یہ اعلان کر چکے ہیں کہ غزہ میں مسلسل اسرائیلی حملوں اور بمباری کے بعد مزید کام کرنا مشکل ہو گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں