’ہم اردن کے ساتھ کھڑے ہیں‘:اردن کے بادشاہ کو سعودی ولی عہد کی یقین دہانی

اردن کے فرمانروا کی ملکی استحکام اور سلامتی سے متعلق سعودی موقف کی تحسین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان اور اردن کے فرمانروا شاہ عبداللہ ثانی نے جمعرات کو ٹیلی فون پر رابطہ کیا ہے۔

مملکت کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ’’ایس پی اے‘‘ کے مطابق دونوں رہنماوں نے برادر ممالک اور عوام کے درمیان مضبوط تاریخی تعلقات، مشرق وسطی اور خصوصا غزہ میں ہونے والی پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا۔

سعودی ولی عہد اور اردنی فرمانروا نے دو ریاستی حل کی بنیاد پر مسئلہ فلسطین کا سیاسی حل تلاش کرنے ضرورت پر زور دیا جو چار جون 1967 کی سرحدوں کے ساتھ ایک آزاد اور خود مختار فلسطینی ریاست کے قیام کی ضمانت دیتا ہے جس کا دارالحکومت مشرقی یروشلم ہو۔

اردن کے فرمانروا نے دونوں ملکوں کے تعلقات کی سطح پر فخر کا اظہار اور انہیں تمام شعبوں میں مستحکم کرنے کی خواہش ظاہر کی۔

ایس پی اے کے مطابق سعودی ولی عہد نے اردن کی سلامتی اور استحکام کے حوالے اردنی حکومت کی طرف سے اٹھائے گئے اقدامات کے لیے مملکت کی حمایت کا اظہار کیا اور کہا کہ سعودی عرب ان حالات میں برادر ملک اردن کے ساتھ کھڑا ہے۔

اردنی فرمانروا نے اردن کی سلامتی اور استحکام کی سپورٹ کے لیے مملکت کے موقف کو سراہا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں