معتمرین میں بھگدڑ یا امن خراب کرنے کی کوئی کوشش سامنے نہیں آئی: پبلک سکیورٹی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی پبلک سکیورٹی فورسزکے ڈائریکٹرلیفٹیننٹ جنرل محمد البسامی نے کہا ہے کہ اس سال عمرہ سیزن کے دوران ہم نے مکہ مکرمہ میں مسجد الحرام کی راہداریوں میں بھگدڑ یا زائرین کے سکون میں خلل ڈالنے کا کوئی کیس نوٹ نہیں کیا۔ انہوں نے کہا کہ ماضی کے تجربے، جدید صلاحیتوں اور عمدہ کارکردگی نے عازمین کی خدمت کو آسان بنانے میں مدد کی۔

لیفٹیننٹ جنرل محمد البسامی نے ’العربیہ‘ سے گفتگو کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ "اس سال عمرہ کے سیزن میں خصوصی سکیورٹی پلانز کے آپریشن میں مصنوعی ذہانت کو ایک لازمی عنصر کے طور پراستعمال کررہے ہیں۔ ہمیں اندازہ ہے کہ رمضان المبارک کے آخری عشرے میں زائرین کی بڑی تعداد کی آمد متوقع ہے۔ اس لیے ہم نے معتمرین اور زائرین کی آسانی کے لیے فول پروف انتظامات کیے ہیں۔

لیفٹیننٹ جنرل محمد البسامی
لیفٹیننٹ جنرل محمد البسامی

انہوں نے کہا کہ پبلک سکیورٹی میں ٹریفک کے منصوبوں اور ہجوم کی منصوبہ بندی کے منصوبوں کےحوالے سے تمام متعلقہ ہم آہنگی ہوتی ہے۔ سینکچری کا انتظام بیرونی پبلک ٹرانسپورٹ اسٹیشنوں کے ذریعے کیا جاتا ہے۔ ر ہمارے پاس نو اسٹیشن ہیں جو پناہ گاہ کے شمالی، جنوبی، مغربی اور مشرقی اطراف میں نقل و حمل کی سہولت فراہم کرتے ہیں۔

اس سال کمانڈ اینڈ کنٹرول سنٹر نے دن بھر مسجد الحرام میں بڑی تعداد میں زائرین کی آمد ریکارڈ کی۔ اس کا انتظام اعلیٰ کارکردگی اور پیشہ ورانہ مہارت کے ساتھ کیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں