اسمارٹ مستقبل کے لیے سعودی وزارت داخلہ نے’ابشر‘ چیلنج کے چوتھے ایڈیشن کا اغاز کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے تخلیقی حل تیارکرنے کے فریم ورک کے اندرسال 2024ء کے لیے "ابشر" چیلنج مقابلہ شروع کیا ہے جو اپنی نوعیت کا چوتھا ایڈیشن ہے۔ اس نئے پروگرام کے لیے "We Innovate for a Smarter Future" عنوان دیا گیا ہے۔ کیونکہ اس میں نئے الگورتھم اور مصنوعی ذہانت کی ایپلی کیشنزکا استعمال کیا گیا ہے۔اس کا مقصد ڈیجیٹل اور فیلڈ سروسزکی ترقی جاری رکھنے اور صارفین کو بہترتجربہ فراہم کرنا ہے۔

"ابشرچیلنج" وزارت داخلہ کی طرف سے شروع کیا گیا ایک اقدام ہے جس کا مقصد وزارت داخلہ کے ’الیکٹرانک ورک‘ اور خدمات خاص طورپر"ابشر" کے ساتھ ساتھ وزارت کے شعبوں کے لیے فیلڈ ورک کی ترقی میں حصہ لینے کے لیے تخلیقی خیالات کی حوصلہ افزائی کرتا اور جدید ٹیکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے ڈیجیٹل تبدیلی میں تخلیقی صلاحیتوں کو فروغ دیتا ہے۔

وزارت داخلہ نے نامزدگیوں کے لیے شعبے متعین کیے ہیں۔ جیسا کہ تخلیقی آئیڈیاز اور سمارٹ حل پیش کرنا جو ڈیجیٹل شناخت کا استعمال کرتے ہوئے سکیورٹی اور حفاظت میں وزارت داخلہ کے کردار کو بڑھاتا ہے تاکہ مملکت کے اندر اور باہر جدید اور تخلیقی ایپلی کیشنز اور خدمات فراہم کی جا سکیں۔

یہ پروگرام آڈیو متن اوربصری مواد کا تجزیہ کرنے اور سمجھنے کے لیے مصنوعی ذہانت کے الگورتھم تیار کرنے میں حصہ ڈالنے، رپورٹس اور کیسز کو سمجھنے میں معاون ہوتا ہے۔ ڈیٹا کو دکھانے اور دیکھنے کے لیے نمونے تلاش کرنے میں مدد دے گا۔ اس کے ساتھ ساتھ یہ وزارت داخلہ کے شعبوں کے درمیان روابط اور مسائل کو تعلقات کو سمجھنے کے قابل بنانے میں مدد دے گا۔

مجموعی طور پر"ابشر" سسٹم کی یاددہانی کے طور پر یہ ڈیجیٹل خدمات فراہم کرنے کے لیے وزارت داخلہ سے منسلک ایک پلیٹ فارم ہے۔ اگرچہ اس نے قدر میں اضافہ کیا ہے جس کی گاہک درخواست نہیں کر سکتا یہ ڈیجیٹل تبدیلی کو بڑھاتا ہے، پائیداری حاصل کرتا ہے، اخراجات کی کارکردگی کو بڑھاتا ہے اور کسٹمر کے تجربے کو بہتر بناتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں