اسرائیلی حملے کا جواب دینے میں عاجلانہ بوکھلاہٹ سے کام نہیں لیں گے: ایرانی کمانڈر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایرانی پاسداران انقلاب کے ایک سینئر کمانڈر نے منگل کے روز دیئے گئے ایک بیان میں کہا ہے کہ ایران اسرائیلی حملے کو جواب دینے کے لئے نپا تلا اور سوچا سمجھا وار کرے گا۔ کسی جلد بازی کا شکار ہو کر کارروائی نہیں کرے گا۔

یہ بات یکم اپریل کو دمشق میں ایرانی قونصل خانے پر کئے گئے حملے کے بارے میں کہی گئی ہے۔ اسرائیلی حملے میں دو سینئیر کمانڈروں سمیت کل سات افراد ہلاک ہو گئے تھے۔ اس کے بعد سے اسرائیل کو ایران کی جوابی کارروائی کا خطرہ لاحق ہے اور اسرائیل مسلسل ہائی الرٹ پر ہے۔

پاسدران انقلاب کی بحریہ کے کمانڈر علی رضا تنگسیری نے کہا ہمارے محبوب سپریم لیڈر علی خامنہ ای نے جیسا کہ کہا ہے ہم اسرائیل کو جواب دیں گے مگر جذباتی ہو کر اور بوکھلائے ہوئے انداز میں نہیں دیں گے۔ خوب سوچ سمجھ کر نپا تلا جواب دیں گے۔'

ایران کے نیم سرکاری خبر رساں ادارے اثنا کے مطابق سینئیر کمانڈر نے کہا ' ہم ایسے نہیں ہیں کہ جواب نہ دیں۔ مگر ٹھیک وقت پر اور اللہ نے چاہا تو بہت ٹھیک جواب دیں گے مگر جلد بازی نہیں کریں گے۔'

واضح رہے ایران اور اسرائیل باہم ایک دوسرے کو روایتی دشمن کے طور پر دیکھتے ہیں۔ لیکن سات اکتوبر کے بعد سے دونوں کے درمیان تناؤ میں مزید اضافہ ہو گیا ہے۔ ایران اسرائیل کی سب سے بڑی اور شدید مخالف فلسطینی مزاحمتی تحریک حماس کا حامی ہے۔ اسرائیل کا کہنا ہے کہ ایران حماس کو ہر طرح کی امداد دیتا ہے۔

اسرائیل مشرق وسطی میں ایرانی حمایت یافتہ گروپوں کے ساتھ جگہ جگہ نبرد آزما ہے۔ ایک طرف اسے حزب اللہ کا سامنا ہے اور دوسری جانب یمنی حوثی اس کے لئے خطرہ بنے ہوئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں