معطل قاری کی تلاوت میں دوبارہ غلطی پر مصری ریڈیو اسٹیشن کےخلاف عوام میں غصہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصرمیں قرآن پاک کی تلاوت کے دوران غلطیوں کی وجہ سے معطل رہنے والے ایک قاری کی دوبارہ قرآن ریڈیو اسٹیشن سے تلاوت کے دوران غلطیوں پر عوامی حلقوں کی طرف سے شدید غم وغصے کا اظہار کیا جا رہا ہے۔

مشہور ریڈیو سٹیشن کے سامعین اس وقت حیران رہ گئے قاری محمد السلکاوی کی طرف سے جنرل پروگرام نیٹ ورک اور قرآن ٹوڈے ریڈیو سٹیشن پر فجر کے بعد قرآن کی تلاوت کرتے ہوئے قرآنی آیات میں تحریف سمیت متعدد غلطیوں کا ارتکاب کیا۔ اس کے علاوہ اس نے تجوید اور تلاوت کے اصول وضوابط کی بھی سنگین نوعیت کی خلاف ورزیاں کیں۔

سامعین نے مطالبہ کیا کہ ریڈیو کے ذمہ داروں سے جلد از جلد تحقیقات کی جائیں اور قرآن پاک کو غلط پڑھنے والے قاری کو ریڈیو پر دوبارہ تلاوت کرنے سے روکا جائے۔

غلطیوں کی تفصیلات

دوسری طرف سے مصری محکمہ اوقاف کے سابق انڈر سیکرٹری الشیخ سعد الفقی نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ سے بات کرتے ہوئے مذکورہ قاری صاحب کی ماضی کی غلطیوں کی تفصیل بتائی۔

انہوں نے کہا کہ قاری اسلکاوی ماضی میں بھی قرآن پاک غلط پڑھنے پر معطل رہ چکے اور وہ ایک سے زائد بار غلطیاں کرچکے ہیں۔ انہوں نے بعض مقامات پر ایسی فاش غلطیاں جہاں قرآن پاک کے الفاظ کے ساتھ ان معانی تک الٹ ہوگئے تھے‘‘۔

انہوں نے مزید کہا کہ قاری السلکاوی نے ایک جگہ پرتلاوت کرتے ہوئے "ويحل لهم الطيباتِ" میں’الطيباتُ‘ کو’رفع‘ کی حرکت کے ساتھ پڑھ کرتلفظ کو غلط کیا۔ "ويضع عنهم إصْرَهم" کو بار بار’’إصرَارَهم‘‘ پڑھا اور پانچ بار اس کی غلطی کی، "ويحرم عليهم الخبائث" کو’ويحرم الخبائث‘پڑھا اور درمیان میں’علیھم‘ غائب کردیا۔ اسی طرح "لا إله إلا هو" کوغط پڑھا۔ اسی طرح ایک جگہ "أنجينا" أنجونا پڑھا پھر دوبارہ تصحیح کردی۔

قابل ذکر ہے کہ مصر میں قرآن مجید کے حفاظ اور قراء کونسل نے قاری السلکاوی کو اس سے قبل دو مرتبہ تلاوت میں غلطیوں کی وجہ سے معطل کیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں