’کانز فلم فیسٹیول‘ میں شامل پہلی سعودی فلم ’نورہ‘ توجہ کا مرکز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب کے ہدایت کار توفیق الزایدی کی فلم "نورہ" کانز فلم فیسٹیول میں پیش کی گئی ہے۔ اسے 77 ویں سیشن کے سرکاری پروگرام میں منتخب فلموں کی فہرست میں "پہلی سعودی فلم" کے طور پر منتخب کیا گیا۔ یہ میلہ 14 سے 26 مئی تک منعقد ہوگا۔

"نورہ" کو ہدایت کار اور مصنف توفیق الزایدی کی پہلی فیچر فلم سمجھا جاتا ہے، جس میں اداکار یعقوب الفرحان، فنکار ماریہ بحراوی اور مشہور اداکار عبداللہ السدحان نے ایسے عناصر کو پیش کیا ہے جو بین الاقوامی سامعین کو اپنی طرف متوجہ کرتے ہیں۔ اس کے واقعات 1990ء کی دہائی میں سعودی عرب کے ایک دور افتادہ گاؤں میں رونما ہونے والے واقعات پر مشتمل ہیں۔

اس کی کہانی ایک ’نورہ‘ نامی لڑکی کے گرد گھومتی ہے۔ ’نورہ‘ اپنا زیادہ تر وقت گاؤں کی دنیا میں دور دراز علاقے میں گذارتی ہے۔ پھر ایک نیا استاد نادر اس گاؤں میں آتا ہے اور ’نورہ‘ سے ملتا ہے۔ ’نورہ‘ اس سے بہت متاثر ہوتی ہے۔ نادر اس کے اندر چھپے فن کے جوہر کو دریافت کر کے بیدار کرتا ہے۔ نادر ’نورہ‘ کو گاؤں سے باہر امکانات کی ایک وسیع دنیا پیش کرتا ہے اور اسے احساس ہوتا ہے کہ اسے اب اس دنیا سے رخصت ہو جانا چاہیے جب اسے پتہ چلا کہ نادر گاؤں میں بس ایک نیا استاد ہے۔

ہدایت کار توفیق الزایدی
ہدایت کار توفیق الزایدی

اس طرح "فلم نورہ" کے ذریعے سعودی سینما نے کانز فلم فیسٹیول میں اپنی نمایاں موجودگی درج کرائی، کیونکہ یہ سب سے اہم بین الاقوامی فلمی میلہ سمجھا جاتا ہے۔ یہ میلہ فلموں کے لیے ایوارڈز جاری کرتا ہے جن میں سب سے اہم "Palme d'Or" ایوارڈ ہے۔ یہ ایوارڈ بہترین فلم کے لیے دیا جاتا ہے۔ یہ دیگر ایوارڈز بھی دیتا ہے۔

سعودی سینما اور فنکار برادری نے فلم نورہ کے انتخاب کو "غیر یقینی حوالے سے" مقابلے کے ایک حصے کے طور پر جسے العلا میں فلمایا گیا تھا کے انتخاب کو "سعودی سنیما" کے لیے ایک کارنامہ قرار دیا۔

بین الاقوامی فلمی میلوں میں اس کا وزن اس کے متن کے تنوع، اس کی داستان اور اس کے اداکاروں کی موجودگی کی وجہ سے بطور مصنف علی سعید کو ایک مثال سمجھا جاتا ہے۔ فلم ڈائریکٹر نے اس انتخاب کو ایک نئی پیش رفت قرار دیا ہے۔

سعودی ہدایت کار ھناء العمیر نے "ایکس" پلیٹ فارم پر اپنے اکاؤنٹ پر کہا کہ کانز فلم فیسٹیول کو سب سے اہم فلمی میلہ سمجھا جاتا ہے۔ یہ سعودی فلم - نورا کی فلم - کامیاب ہونے والی پہلی فلم ہے جسے کسی عالمی مقابلے میں پیش کیا گیا ہے۔

ہدایت کار توفیق الزایدی نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ سے بات کرتے ہوئے فلم کی شوٹنگ العلاء میں کرنے کی وجہ بتائی۔ انہوں نے کہا کہ "کہانی کے بارے میں میری سوچ کے آغاز سے ہی معاملہ العلا کے انتخاب پر مرکوز تھا۔ میں اسے اچھی طرح جانتا ہوں اور جب میں العلاء کا وزٹ کرنے گیا تو مجھے یقین ہوگیا کہ میرا فیصلہ بالکل درست ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں