اسرائیل پرحملے کے مقاصد کامیابی سے حاصل کر لیے گئے ہیں: ایرانی پاسداران انقلاب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کی سپاہ پاسداران انقلاب نے کہا ہے کہ اسرائیل پر حملے کے اہداف کامیابی سے حاصل کر لیے گئے۔

ایرانی پاسداران انقلاب نے امریکہ کو ایرانی مفادات کو نقصان پہنچانے والے کسی بھی اقدام کی حمایت یا اس میں حصہ لینے کے خلاف خبردار کیا تھا اور امریکی اور اسرائیلی دھمکیوں کا باہمی اور متناسب جواب دینے کا عزم کیا تھا۔

ایران نے اسرائیل پر اپنے پہلے براہ راست حملے میں کل ہفتے کی رات دیر گئے اسرائیل پر دھماکہ خیز ڈرون اور میزائلوں کا ایک بیراج فائر کیا۔

ایک اسرائیلی اہلکار نے اتوار کے روز ’ٹائمز آف اسرائیل‘ اخبار کو بتایا کہ ایرانی حملے پر اسرائیلی ردعمل کے بارے میں ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا ہے۔ اہلکار نےمزید کہا کہ جنگی کونسل کے اجلاس کے دوران مقامی وقت کے مطابق 3 بجے ممکنہ ردعمل پر تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

اسرائیلی سکیورٹی کابینہ ایرانی حملے کے جواب پر تبادلہ خیال کرے گی۔ ایک اسرائیلی سیاسی ذریعے کے مطابق حملے کے نتائج اور امریکی موقف کی روشنی میں ردعمل کا امکان کم ہو گیا ہے۔ انہوں نے نشاندہی کی کہ امریکہ نے ایرانی حملے کا مقابلہ کرنے میں حاصل ہونے والی کامیابیوں پر مطمئن رہنے کو کہا ہے۔

اپنی طرف سےاسرائیلی فوج کے ترجمان ڈینیل ہاگری نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ ایران نے رات کے وقت اسرائیل پر 300 سے زائد گولے داغے اور ان میں سے 99 فیصد کو پسپا کر دیا گیا۔ ایرانی بیلسٹک میزائلوں کی ایک بہت کم تعداد سرحد میں داخل ہوئی اور اس کی وجہ سے معمولی نقصان ہوا۔

انہوں نے کہا کہ ایران نے 170 ڈرون اور 30 سے زیادہ کروز میزائل داغے جن میں سے کوئی بھی ہماری سرزمین میں داخل نہیں ہوا، انہوں نے مزید کہا کہ "ہمارے طیاروں نے ایران کی طرف سے داغے گئے 25 میزائلوں کو ہماری سرحدوں سے باہر روک کر تباہ کردیا"۔

تہران نے یکم اپریل کو دمشق میں اس کے قونصل خانے پر اسرائیلی حملے کا جواب دینے کے عزم کا اظہار کیا تھا۔اس حملے میں پاسداران انقلاب کے سات افسران ہلاک ہوگئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں