ہم نے300 ایرانی میزائلوں اور ڈرونز پسپا کردیا،اسرائیلی فوج، فتح ہماری ہوگی نیتن یاھو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو نے آج اتوار کو کہا ہے کہ اسرائیل ایرانی میزائلوں اور ڈرونز کی بیراج کو پسپا کرنے کے بعد فتح حاصل کرے گا۔ دوسری جانب اسرائیلی فوج نے اعلان کیا ہے کہ ایرانی حملے کو ناکام بنا دیا گیا ہے۔

نیتن یاہو نے ’ایکس‘ پلیٹ فارم پر ایک بیان میں کہا کہ "ہم نے اعتراض کیا اور مقابلہ کیا مل کر ہم فتح مند ہوں گے"۔

دوسری طرف اسرائیلی فوج کے ترجمان ڈینیل ہگاری نے ایک پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ ایران نے رات کے وقت اسرائیل پر 300 سے زائد میزائل اور ڈرون داغے اور ان میں سے 99 فیصد کو پسپا کر دیا گیا۔ یاد رہے کہ ایرانی بیلسٹک میزائلوں کی ایک بہت کم تعداد سرحد میں داخل ہوئی اور اس کی وجہ سے معمولی نقصان ہوا۔ فضائی اڈے متاثر ہوئے مگر کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

انہوں نے کہا کہ ایران نے 170 ڈرون اور 30 سے زیادہ کروز میزائل داغے جن میں سے کوئی بھی ہماری سرزمین میں داخل نہیں ہوا۔ انہوں نے مزید کہا "ہمارے طیاروں نے ایران کی طرف سے داغے گئے 25 میزائلوں کو ہماری سرحدوں سے باہر روک دیا"۔

انہوں نے مزید کہا کہ رات کے وقت ہونے والے کچھ لانچیں عراق اور یمن کے ساتھ ساتھ ایران سے بھی کی گئی تھیں۔ انہوں نے کہا کہ ایران نے ایک انتہائی خطرناک اقدام کیا ہے جس نے خطے کو کشیدگی کی طرف دھکیل دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایرانی حملے کو "ناکام" کر دیا گیا اور چیف آف سٹاف نے آئندہ کے منصوبوں کی منظوری دی اور انہیں سیاسی سطح پر پیش کیا ہے۔

اسرائیلی فوج کے ترجمان نے کہا کہ ایران نے اپنے حملے میں کروز میزائلوں اور ڈرونز کے علاوہ بیلسٹک میزائلوں کا استعمال کیا۔ مسلح افواج اپنی تمام آپریشنل صلاحیتوں کو برقرار رکھتی ہیں اور فالو اپ آپریشنز کے آپشنز پر بات چیت کر رہی ہیں۔

اس سے پہلے اسرائیلی وزیر دفاع یوآو گیلنٹ نے اتوار کو ایک ویڈیو بیان میں کہا تھا کہ اسرائیل نے ایران کی جانب سے میزائلوں اور ڈرونز کی پہلی بڑی لہر کا جواب دیا لیکن تصادم ابھی ختم نہیں ہوا۔

گیلنٹ نے کہا کہ "پوری دنیا نے آج رات دیکھا کہ ایران کون ہے۔حملے کی روک تھام متاثر کن تھی اور اس کے نتیجے میں صرف چند ہلاکتیں ہوئیں۔ ہم چوکس ہیں اور کسی بھی منظر نامے کے لیے تیار ہیں"۔

انہوں نے مزید کہا "جنگ ابھی ختم نہیں ہوئی ہے۔ ہمیں اسرائیلی فوج کی ہدایات اور ہوم فرنٹ کمانڈ کی ہدایات پر چوکنا اور دھیان دینا ہوگا"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں