سعودی ولی عہد اور عراقی وزیراعظم کا خطے میں کشیدگی پر تبادلہ خیال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان اور عراقی وزیر اعظم محمد شیاع السودانی نے فون پر خطے میں حالیہ فوجی کشیدگی اور سلامتی اور استحکام پر تبادلہ خیال کیا۔ دونوں رہ نماؤں نے ایران اور اسرائیل کشیدگی اور خطے پر اس کے سنگین اثرات پر بھی بات کی۔

سعودی ولی عہد اور عراقی وزیر اعظم نے صورتحال کو مزید خراب ہونے سے روکنے اور خطے کو کشیدگی کے خطرات سے بچانے کے لیے ضروری کوششیں کرنے کی اہمیت پر بھی زور دیا۔

اس تناظر میں سعودی پریس ایجنسی نے اتوار کو بتایا کہ وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے اپنے امریکی ہم منصب انٹونی بلنکن سے خطے میں بڑھتی کشیدگی اور اس کے اثرات کی سنگینی پر تبادلہ خیال کیا۔ سرکاری ایجنسی نے مزید کہا کہ دونوں وزراء خارجہ نے اس کشیدگی کے اثرات کو روکنے کے لیے کی جانے والی کوششوں پر تبادلہ خیال کیا۔

شہزادہ فیصل بن فرحان نے اپنے ایرانی ہم منصب حسین امیر عبداللہیان سے بھی فون پر بات کی۔ انہوں نے خطے کی صورتحال میں پیش رفت کے ساتھ ساتھ سلامتی کے بحران کے پس منظر میں بڑھتی ہوئی کشیدگی اور اس کے اثرات پر تبادلہ خیال کیا۔

وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان اور ان کے ایرانی ہم منصب حسین امیر عبداللہیان کے درمیان علاقائی اور بین الاقوامی پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس کے علاوہ غزہ کی پٹی کی صورتحال میں تازہ ترین پیش رفت، اسرائیل پر ایرانی حملے پر بھی بات کی۔ دونوں رہ نماؤں نے غزہ میں جاری اسرائیلی فوج کشی بند کرنے پر زور دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں