غزہ کی امداد میں ڈرامائی طور پر اضافہ ہوا ہے: جان کربی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

وائٹ ہاؤس کے قومی سلامتی کے ترجمان جان کربی نے پیر کے روز کہا کہ غزہ کی پٹی میں انسانی امداد کی ترسیل میں گزشتہ چند دنوں میں بڑی مقدار میں اضافہ ہوا ہے۔ نیز انہوں نے کہا کہ امریکہ کو یہ دیکھنے کی ضرورت ہے کہ یہ امداد برقرار رہے۔

کربی نے ایم ایس این بی سی کے ساتھ ایک انٹرویو میں کہا کہ "امداد میں اضافہ ہوا ہے اور صرف گذشتہ چند دنوں میں کافی ڈرامائی طور پر۔ یہ بات اہم ہے لیکن اسے برقرار رکھنا ہو گا۔"

کربی نے ایم ایس این بی سی کے ساتھ ایک انٹرویو میں کہا کہ 2,000 سے زیادہ اور صرف گذشتہ 24 گھنٹوں میں تقریباً 100 امدادی ٹرک غزہ میں داخل ہونے میں کامیاب ہوئے ہیں۔

صدر جو بائیڈن نے اس ماہ کے شروع میں دھمکی دی تھی کہ وہ غزہ میں اسرائیل کی جارحیت کی حمایت اس شرط پر کریں گے کہ وہ امدادی کارکنوں اور عام شہریوں کے تحفظ کے لیے ٹھوس اقدامات اٹھائے۔

یہ اقدام ایک اسرائیلی حملے کو بنیاد بنا کر کیا گیا جس میں ورلڈ سینٹرل کچن کے سات امدادی کارکن ہلاک ہو گئے تھے۔ یہ پہلا موقع تھا جب بائیڈن انتظامیہ نے اسرائیلی فوجی رویے پر اثر انداز ہونے کے لیے امریکی امداد سے فائدہ اٹھانے کی کوشش کی تھی۔

اردن سے غزہ کے بچوں کے لیے امداد کی ڈراپنگ
اردن سے غزہ کے بچوں کے لیے امداد کی ڈراپنگ

کربی نے سی این بی سی پر ایک الگ انٹرویو میں مزید کہا، جیسا کہ بائیڈن نے کہا تھا کہ "غزہ کے حوالے سے ہماری پالیسی بدل جائے گی اگر ہم وقت کے ساتھ ساتھ اہم تبدیلیاں نہ دیکھیں۔"

حماس کے سات اکتوبر کے حملے کے نتیجے میں غزہ میں اسرائیل کی فضائی اور زمینی مہم کو چھے ماہ ہو چکے ہیں جس کے بعد تباہ شدہ فلسطینی انکلیو کو قحط اور وسیع بیماری کا سامنا ہے اور اس کے تقریباً تمام باشندے اب بے گھر ہیں۔

امدادی ایجنسیوں نے شکایت کی ہے کہ اسرائیل خوراک، ادویات اور دیگر ضروری انسانی سامان تک کافی رسائی کو یقینی نہیں بنا رہا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں