اردنی فضائیہ نے ممکنہ دراندازی کے خطرے کے پیش نظر فضائی نگرانی تیز کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اردن کی مسلح افواج نے ایک بیان میں کہا ہے کہ فضائیہ نے مملکت کی فضائی حدود کو پرامن اور محفوظ رکھنے اور کسی بھی قسم کی ممکنہ دراندازی کی روک تھام کے لیے فضائی نگرانی تیز کردی ہے۔

اردنی افواج کی طرف سے یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب دوسری جانب ہفتے کی شام ایران نے اسرائیل پر حملے کے دوران اردنی فضائی حدود کو استعمال کرتے ہوئے متعدد ڈرونز اور میزائل داغے تھے۔ اس واقعے کے بعد اردنی فضائیہ ہائی الرٹ ہوگئی ہے۔

اس تناظر میں اردنی مسلح افواج کے ترجمان نے بتایا کہ آج بہ روز منگل 16 اپریل 2024ء کو صبح تقریباً 1:00 بجے رائل اردن کی فضائیہ نے کسی بھی فضائی دراندازی کو روکنے اور دفاع کے لیے اپنی فضائی حدود میں اضافہ کیا ہے۔

ترجمان نے مزید کہا کہ یہ اقدام اردن کے اس پختہ مؤقف کی تصدیق کرتا ہے کہ اردن کی فضائی حدود کو کسی بھی مقصد کے لیے استعمال کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔اس کے علاوہ اردن اپنی فضائی خودمختاری کی خلاف ورزیوں کی روک تھام اور ملک و قوم کی سلامتی کو لاحق خطرات کے تدارک کے لیے موثر اقدامات کرے گی۔

مسلح افواج کے سرکاری ترجمان نے شہریوں پر زور دیا کہ وہ سوشل میڈیا پر پھیلائی جانے والی افواہوں پر توجہ نہ دیں جس سے معاشرے کے افراد میں بے چینی پھیلے۔اس حوالے سے اردنی حکومت اور افواج کی طرف سے جاری کردہ معلومات پر اعتبار کریں۔

اردن کے حکام نے اتوار کو کہا تھا کہ انہوں نے فضائی حدود میں داخل ہونے والے متعدد میزائل اور ڈرونز کو مار گرایا تھا۔ یہ ڈرونز اور میزائل ایران کی طرف سے اردن کی فضائی حدود کا استعمال کرتے ہوئے داغے گئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں