اس سے پہلے کہ بہت دیر ہو جائے ایران کو روکا جائے: اسرائیلی وزیر خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی وزیر خارجہ یسرائیل کاٹز نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا ہے کہ کارروائی کرتے ہوئے ایران کو روکے، ورنہ بہت دیر ہوجائے گی اور وقت ہاتھ سے نکل گیا تو حالات پر قابو پانا مشکل ہوجائے گا۔

کاٹز نے 32 ممالک پر زور دیا کہ وہ ایرانی میزائل پروگرام پر پابندیاں لگائیں اور پاسداران انقلاب کو دہشت گرد تنظیم قرار دیں۔

انہوں نے آج منگل کے روز "ایکس" پلیٹ فارم پر اپنے اکاؤنٹ پر پوسٹ کی گئی ایک ٹویٹ میں اس بات پر زور دیاکہ ان کا ملک "ایران پر سیاسی حملے" کی قیادت کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ "ایرانی میزائل پروگرام پر پابندیاں عائد کرنا اور پاسدارانِ انقلاب کو دہشت گرد تنظیم قرار دینا "ایران پر سیاسی حملہ" کرنا ہے۔اس سے ایران کی سرحد پار دہشت گردی کی کارروائیوں کو کمزور کرنے میں مدد ملے گی۔

جواب دینے کے آپشنز

اسرائیلی وزیرخارجہ کا یہ بیان اس وقت سامنے آیا جب اسرائیلی جنگی کونسل نے حالیہ ایرانی حملے کا جواب دینے کے لیے فوجی آپشنز کا مطالعہ شروع کردیا ہے۔ ان آپشنزمیں جانی نقصان سے بچتے ہوئے ایرانی تنصیبات کو نشانہ بنانا بھی شامل ہے۔

انہوں نے عالمی سطح پر تہران کی تنہائی کو بڑھانے کے لیے سفارتی آپشنز پر بھی بات کی۔

دمشق میں ایرانی قونصلیٹ کی ویب سائٹ سے
دمشق میں ایرانی قونصلیٹ کی ویب سائٹ سے

دوسری جانب امریکہ نے تل ابیب پر زور دیا کہ وہ کشیدگی کو کم کرے اور تحمل سے کام لے ساتھ ہی یہ واضح کر دیا کہ وہ ایرانی مفادات پر کسی بھی اسرائیلی حملے میں حصہ نہیں لے گا۔

یکم اپریل کو دمشق میں ایرانی سفارت خانے کے احاطے میں اسرائیلی حملےکے بعد گذشتہ ہفتے کی رات کو ایران نے اسرائیل پر ڈرونز اور میزائلوں سےحملہ کیا تھا۔ اس حملے کے بعد اسرائیل جوابی کارروائی کی تیاریوں میں مصروف ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں