مشرق وسطیٰ

جنوبی لبنان میں اسرائیلی فضائی حملے میں حزب اللہ کے کمانڈر سمیت تین ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لبنان اور اسرائیل کی سرحدوں پر کشیدگی کے جلو میں اسرائیل نے جنوبی لبنان پر ایک کار پر حملہ کر کے حزب اللہ کے ایک اہم کمانڈر سمیت تین افراد کو ہلاک کر دیا۔

اسرائیلی فوج نے جنوبی لبنان میں کیے گئے ایک حملے میں حزب اللہ کے ایک فیلڈ کمانڈر کی ہلاکت کا دعویٰ کیا ہے۔ فوج کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ایک فوجی طیارے نے لبنان کے عین بعال علاقے میں حزب اللہ کے ساحلی سیکٹر کے رہ نما اسماعیل یوسف باز کو بمباری کر کے ہلاک کر دیا۔ بیان میں مزید کہا کہ مذکورہ رہ نما نے "شیل اور ٹینک شکن میزائل داغنے کی منصوبہ بندی میں حصہ لیا تھا‘‘۔

العربیہ اور الحدث کے نامہ نگار نے اطلاع دی ہے کہ ایک اسرائیلی حملے نے جنوبی لبنان کے قصبے عین بعال میں حزب اللہ کے ایک فیلڈ کمانڈر کی گاڑی کو نشانہ بنایا گیا۔ اس حملے میں فیلڈ کمانڈر اور ان کے دو ساتھی مارے گئے۔

انہوں نے کہا کہ حزب اللہ کے مقتول کمانڈر کو "ابو جعفر باز" کی کنیت سے جانا جاتا تھا اور وہ محاذ پر موجود فوجی فارمیشنز کے کمانڈروں میں سے ایک تھا۔

انہوں نے بتایا کہ ہلاک ہونے والا شخص گاڑی میں اکیلا تھا۔ دو دیگر افراد گاڑی کے قریب ہونے کی وجہ سے مارے گئے۔

دوسری طرف حزب اللہ نے کمانڈر کی ہلاکت کا اعتراف کرتے ہوئے اس واقعے پر مقتول کمانڈر کے خاندان سے تعزیت کی ہے۔

العربیہ/الحدث ذرائع کے مطابق چند لمحوں بعد اسرائیلی ڈرون نے شہابیہ قصبے میں دو کاروں کو نشانہ بنایا، جس کے نتیجے میں متعدد افراد کے زخمی ہونے کے علاوہ دو حزب اللہ جنگجو ہلاک ہلاک ہو گئے۔

دونوں مرنے والوں میں سے ایک کا تعلق شہابیہ قصبے سے تعلق رکھنے والے شہوری خاندان سے تھا اور دوسرا فضل اللہ خاندان سے تھا جو جنوبی قصبے عیناتہ سے تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں