غزہ میں دوبارہ کھلنے والی بیکری امید کا باعث، سینکڑوں لوگ روٹی کے لیے قطار میں منتظر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

مہینوں کی محرومی کا شکار اور وسیع پیماے پر ناکہ بندی شدہ علاقے میں کھانے کا تازہ سامان پہنچا تو غزہ شہر میں دوبارہ کھولی گئی بیکری میں سینکڑوں فلسطینی روٹی کے لیے قطار میں آ کھڑے ہوئے۔

عالمی غذائی پروگرام کی طرف سے دوبارہ فراہمی کے بعد بیکری سے ارزاں روٹی کے پیکٹ ملنے لگے تو وہ اس ہفتے غزہ کے سب سے بڑے شہر کی گلیوں میں گھنٹوں انتظار کرتے رہے۔

بچے صبر سے جوانوں اور بوڑھوں کے ساتھ قطار میں کھڑے تھے۔

14 اپریل 2024 کو غزہ شہر میں ایک بیکری کے باہر ارزاں روٹی خریدنے کے بعد ایک فلسطینی شخص خوشی کا اظہار کر رہا ہے۔ (اے ایف پی)
14 اپریل 2024 کو غزہ شہر میں ایک بیکری کے باہر ارزاں روٹی خریدنے کے بعد ایک فلسطینی شخص خوشی کا اظہار کر رہا ہے۔ (اے ایف پی)

قطار میں کھڑے ہوتے وسام داؤد نے اے ایف پی کو بتایا، "جب اسرائیل نے ہمیں آٹا حاصل کرنے سے روک دیا تو ہم نے مکئی اور جو کھانا شروع کر دیا حتیٰ کہ بات یہاں تک پہنچ گئی کہ ہمیں کچھ جانوروں کا کھانا بھی کھانا پڑا۔"

فراس سکر نے بھی قطار میں کھڑے ہوئے کہا، "میں خوش ہوں لیکن خدا کی قسم ہم تھک چکے ہیں۔" نیز انہوں نے کہا، "ہم نے اپنے بیٹے بیٹیاں اور بیویاں کھو دی ہیں۔ ہم اپنی پوری زندگی کھو چکے ہیں۔"

انہوں نے مزید کہا، "میں اس سے بڑھ کر اور کیا مانگوں؟ میرا واحد پیغام یہ ہے کہ جنگ بند کر دی جائے۔"

 بے گھر فلسطینی 14 اپریل 2024 کو غزہ شہر میں ایک بیکری سے ارزاں روٹی خریدنے کے لیے قطار میں کھڑے ہیں۔ (اے ایف پی)
بے گھر فلسطینی 14 اپریل 2024 کو غزہ شہر میں ایک بیکری سے ارزاں روٹی خریدنے کے لیے قطار میں کھڑے ہیں۔ (اے ایف پی)

اسرائیل کو غزہ کی پٹی میں حماس کے خلاف جاری انتھک جنگ پر بڑھتی ہوئی عالمی مخالفت کا سامنا ہے جس نے شہر کے وسیع علاقے کو تباہ شدہ عمارات کی بنجر زمین، بم حملوں سے پیداشدہ گڑھوں اور ملبے کے ڈھیر میں تبدیل کر دیا ہے۔

جنگ اور محاصرے نے ایک سنگین انسانی بحران پیدا کیا ہے جس میں خوراک، پانی، ادویات اور ایندھن کی شدید قلت ہے جہاں صرف اک دکا امداد ہی دستیاب ہے۔

 ایک فلسطینی کارکن 14 اپریل 2024 کو غزہ شہر کی ایک بیکری میں تازہ تیارکردہ روٹی کا بندوبست کر رہا ہے۔ (اے ایف پی)
ایک فلسطینی کارکن 14 اپریل 2024 کو غزہ شہر کی ایک بیکری میں تازہ تیارکردہ روٹی کا بندوبست کر رہا ہے۔ (اے ایف پی)

اقوامِ متحدہ نے خبردار کیا ہے کہ غزہ کی جنگ اور محاصرہ "دنیا میں تباہ کن بھوک کی بلند ترین سطح" کی وجہ بنے ہیں۔

اسرائیلی وزیرِ اعظم بنجمن نیتن یاہو نے مخالفت کے باوجود جنگ کو آگے بڑھانے کے عزم کا اظہار کیا ہے۔

فلسطینی 14 اپریل 2024 کو غزہ شہر کی ایک بیکری میں ارزاں روٹی خریدنے کے لیے قطار میں کھڑے ہیں۔ (اے ایف پی)
فلسطینی 14 اپریل 2024 کو غزہ شہر کی ایک بیکری میں ارزاں روٹی خریدنے کے لیے قطار میں کھڑے ہیں۔ (اے ایف پی)

'ناکافی'

عالمی غذائی پروگرام نے اتوار کو کہا، "تصادم اور رسائی کی کمی کی وجہ سے بیکریاں کئی مہینوں سے کام کرنے سے قاصر ہیں" اور اعلان کیا کہ اس نے "روٹی کی پیداوار شروع کرنے کے لیے غزہ میں ایک بیکری کو ایندھن پہنچایا تھا۔"

اس نے سوشل میڈیا نیٹ ورک ایکس پر ایک پوسٹ میں خبردار کیا، "ہمیں قحط روکنے کے لیے محفوظ اور پائیدار رسائی کی ضرورت ہے۔"

فلسطینی 14 اپریل 2024 کو غزہ شہر میں ایک بیکری سے ارزاں روٹی خریدنے کے لیے قطار میں کھڑے ہیں۔ (اے ایف پی)
فلسطینی 14 اپریل 2024 کو غزہ شہر میں ایک بیکری سے ارزاں روٹی خریدنے کے لیے قطار میں کھڑے ہیں۔ (اے ایف پی)

غزہ کے رہائشی خالد الغولہ نے اے ایف پی کو بتایا کہ وہ "چھ گھنٹے تک روٹی لینے کے لیے انتظار کرتے رہے"۔

انہوں نے کہا، "یہ ایک انتہائی مشکل جدوجہد ہے۔ یہ ناجائز ہے."

بیکری کے عقبی کمرے میں روٹی پیک کرنے والے کارکنان سے گھرے معتز اجور نے کہا، "دستیاب مقدار ظاہر ہے کہ کافی نہیں ہیں۔ ہمیں امید ہے کہ لوگ اور عالمی غذائی پروگرام بھی ہماری مدد کریں گے تاکہ مقدار کافی ہو جائے اور ہم اپنا کام جاری رکھ سکیں۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں