سعودی ایئر پورٹس پر مسافروں کی تعداد میں غیر معمولی اضافہ ریکارڈ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سال 2023ء کے دوران سعودی عرب میں فضائی نقل و حمل نے مسافروں کی آمد ورفت کا ایک نیا ریکارڈ قائم کیا۔ پچھلے سال تقریباً 112 ملین مسافروں نے سعودی عرب کے ہوائی اڈوں کے ذریعے سفر کیا۔ سال 2022ء کے مقابلے میں یہ تعداد 26 فیصد رہی جب کہ کرونا وبا سے قبل سال 2019ء کے مقابلے میں آٹھ فیصد سے زیادہ۔

سعودی عرب کی جنرل اتھارٹی آف سول ایوی ایشن نے جاری کردہ فضائی ٹریفک کی کارکردگی رپورٹ میں بتایا ہے کہ سال 2023ء کے دوران مملکت کے ہوائی اڈوں سے پروازوں کی تعداد تقریباً آٹھ لاکھ 15 ہزار تک پہنچ گئی جو کہ 2022ء کے مقابلے میں 16 فیصد زیادہ ہے۔

مملکت نے گذشتہ سال کے دوران مسافروں کی تعداد اور بین الاقوامی پروازوں کے لحاظ سے ریکارڈ اضافہ دیکھا۔ پچھلے سال اس سے پیوستہ سال کی نسبت تقریباً 61 ملین اضافی مسافروں نے سفرکیا جب کہ اضافی پروازوں کی تعداد تین لاکھ 94 ہزار سے زیادہ ہو گئی۔

ریاض کا کنگ خالد انٹرنیشنل ایئرپورٹ 27 پروازوں کی فی گھنٹہ کی شرح کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہا اور تیسرے نمبر پر آنے والے کنگ فہد انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر 2023 کے دوران اندرون ملک پروازوں کی فی گھنٹۃ تعداد 11 تک پہنچ گئی۔

سال 2023 کے دوران سعودی ہوائی اڈوں پر فضائی مال برداری کے حجم میں سات فیصد سے زیادہ کا اضافہ دیکھا گیا جس کی مجموعی مقدار نو لاکھ 18 ہزار ٹن تھی جب کہ 2022ء میں یہ مقدار آٹھ لاکھ 54 ہزار ٹن تھی۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ جنرل اتھارٹی آف سول ایوی ایشن مملکت میں ہوائی نقل و حمل کے شعبے کے لیے ریگولیٹری ادارہ ہے اور اس شعبے کے لیے انتظامی ضوابط مرتب کرنے، ان کی نگرانی کرنے اور متعلقہ حکام کے ساتھ ان کے نفاذ کی پیروی کرنے کا ذمہ دار ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں