اسرائیل کی وجہ سے ’جی پی ایس‘ سسٹم کی خرابی پر اردن کے عوامی حلقوں میں غصہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اردن کے لاکھوں باشندوں کو اسرائیل کی وجہ سے ایک نئی پریشانی کا سامنا ہے اور اس پریشانی کی وجہ اسرائیل ہے۔ اردن کی تمام گورنریوں میں ’گوگل‘ میپس ایپلی کیشن اور ’جی پی ایس‘ سے متعلق ایپلی کیشنز میں خلل کی شکایت کی جا رہی ہے۔ اردن کا ایک سرکاری ذریعے نے اس بات کی تصدیق کی کہ اس خلل کی وجہ اسرائیل ہے۔

اردنی ٹیلی کمیونیکیشن ریگولیٹری اتھارٹی میں فریکوئینسی اسپیکٹرم مینجمنٹ ڈائریکٹوریٹ کے ڈائریکٹر انجینیر نضال السمارہ نے گلوبل پوزیشننگ سسٹم (GPS) کےمتاثر ہونےکی وجہ بیان کرتے ہوئے کہا کہ اس کی وجہ اسرائیل ہے۔

بین الاقوامی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق گلوبل پوزیشننگ سسٹم (جی پی ایس) کو فوجی مقاصد کے لیے استعمال کیا جاتا تھا لیکن اس کے بعد یہ بہت سے شعبوں کے لیے تیار کیا گیا اور اسے عام استعمال کیا جاتا ہے۔ اس کی وجہ عسکری میدان میں لڑاکا طیاروں، ڈرونز اور بمباروں کی درستگی کو متاثر کرنا ہے۔ اس سسٹم کی مدد سے دشمن کے طیاروں، ڈرونز اور میزائلوں کو غلط ٹریک پر لے جایا جا سکتا ہے۔

سمارا نے کہا کہ گڑبڑ کا باعث بننے والے فریقین سے رابطہ کیا گیا ہے اور وہ ابھی تک جواب کا انتظار کر رہے ہیں۔ اس کے جواب میں شہریوں کو گوگل میپس اور جی پی ایس سے متعلق ایپلی کیشنز سے درپیش پریشانی کا سامنا ہے جو کہ "لوکیشن" سسٹمز میں واضح طور پر ظاہر ہوتا ہے‘‘۔

سمارا نے نشاندہی کی کہ گلوبل پوزیشننگ سسٹم (GPS) کی مداخلت سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والے علاقے مملکت کے مغربی اور شمالی علاقے ہیں۔

اس تناظر میں سمارا نے کہا کہ فضائی اور سمندری نیوی گیشن سسٹم زمینی اور کامن نیوی گیشن سسٹم (GPS) میں استعمال ہونے والے نظام سے مختلف ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں