سعودی الیکٹرانک یونیورسٹی کی ٹیوشن فیس معافی کی اطلاعات، جامعہ نے تردید کردی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں ایک یونیورسٹی کی جانب سے ٹیوشن فیس معاف کرنے کی اطلاعات اس وقت غلط ثابت ہوگئیں جب یونیورسٹی نے بیان جاری کردیا کہ یہ اطلاعات درست نہیں ہیں۔ سعودی الیکٹرانک یونیورسٹی نے ٹیوشن فیس سے مستثنیٰ زمرہ جات کے تعین کے حوالے سے اپنی طرف سے کسی سرکاری فیصلے کے اجرا کی تردید کردی۔ سماجی روابط کی ویب گاہوں پر گردش کرنے والی کچھ چیزوں کے غلط ہونے کی تصدیق ہوگئی۔ یونیورسٹی نے غلط معلومات پھیلانے کے حوالے تحقیقات کا مطالبہ بھی کردیا۔

سوشل میڈیا سائٹس پر یہ افواہیں پھیلی تھیں کہ سعودی الیکٹرانک یونیورسٹی نے تین اقسام کے زمروں کو فیسوں سے مستثنیٰ قرار دے دیا ہے۔ ان میں فیصلہ کن طوفان میں حصہ لینے والوں کے بچے شامل تھے۔ سماجی تحفظ سے فائدہ اٹھانے والے تھے۔ اور سماجی امور سے وابستہ دیگر کچھ طلبہ تھے۔ یونیورسٹی نے زور دیا کہ طلبہ صرف یونیورسٹی کے باضابطہ سوشل میڈیا اکاؤنٹس پر آنے والی اطلاعات کو ہی درست سمجھیں۔

واضح رہے ریاض میں واقع سعودی الیکٹرانک یونیورسٹی سے فارغ التحصیل طلبہ کی تعداد تقریباً 13 ہزار تک پہنچ گئی ہے۔ یونیورسٹی میں تدریسی عملے کے ارکان کی تعداد 1,024 تک پہنچ گئی ہے۔ یونیورسٹی ای لرننگ ایپلی کیشنز اور ٹیکنالوجیز اور دیگر ذرائع پر مبنی بہترین تعلیمی ماڈلز پر مبنی تعلیم فراہم کرتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں