سعودی عرب: چلتی گاڑی سے ایک سالہ بچی گر گئی، بچانے کی دلچسپ تفصیلات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں دارالحکومت ریاض میں ناردرن رنگ روڈ کراس کرتے ہوئے نوجوان طلال فہید العنزی کو یہ توقع نہیں تھی کہ رات کو چلتے ہوئے ایک سالہ بچی اپنے والد کی گاڑی سے گر جائے گی۔

نوجوان طلال نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ میں شمالی رنگ روڈ پر ثمامہ کے ساتھ پل کے اوپر سے گزر رہا تھا کہ رات گیارہ بجے ایک ہنڈائی ٹکسن جیپ سامنے آئی۔ جیب میں فیملی سوار تھی۔ اچانک کار کا پچھلا دروازہ کھلا اور ایک خوفناک منظر میں چھوٹی بچی کار سے باہر گر گئی۔ وہ زمین پر بری طرح گری اور زخمی ہوگئی اور اس کے چہرے سے خون بہنا شروع ہوگیا۔

طلال العنزی نے کہانی سناتے ہوئے کہا کہ میں رک گیا اور میرے ساتھ والی تمام کاریں رک گئیں جب ہم نے چھوٹی بچی کو دیکھا تو میں نے چھوٹی بچی کو اپنے ہی خون میں ڈوبا ہوا پایا۔ میں جلدی سے بچی کو لے کر ہسپتال پہنچا۔ دوسری گاڑیوں کے مالکان نے چھوٹی بچی کے اہل خانہ کو روکا کیونکہ انہیں یہ بھی معلوم نہیں تھا کہ وہ گر گئی ہے۔

العنزی نے مزید کہاکہ میں بچی کو رمال محلے کے ابا الخیل ہسپتال میں لے گیا۔ وہاں اس بچی کا استقبال کیا گیا اور اس کے زخموں پر پٹی باندھی گئی۔ بچی رو رہی تھی۔ اس کا علاج کیا گیا اور اس کے گھر والے 10 منٹ کے اندر پہنچ گئے۔ اس کے والد اور والدہ بے چین تھے اور رو رہے تھے۔ اس کے والد نے میرا شکریہ ادا کیا۔

طلال نے کہا میں نے جو کیا وہ حب الوطنی کے ناطے ایک فریضہ تھا۔ کسی بھی شہری کو ایسے حالات میں اپنا حصہ ڈالنا چاہیے۔ مجھے اس بچی کی جان بچانے پر خوشی محسوس ہو رہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں