آباد کار فلسطینی پرچم اتارنے کی کوشش کے دوران بارود سرنگ پھٹنے سے ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطین کے دریائے اردن کے مغربی کنارے میں ایک مقام پر فلسطینی پرچم کو اتار پھینکنے کی کوشش کرنے والا ایک اسرائیلی آباد کار بارودی سرنگ پھٹنے سے ہلاک ہوگیا۔

یہ واقعہ ایک ایسے وقت میں پیش آیا ہے جب گذشتہ اڑتالیس گھںٹوں کے دوران غرب اردن کےشمالی شہر طولکرم میں نورشمس کیمپ پر اسرائیلی فوج اور آباد کاروں کے حملوں میں 14 فلسطینیوں کی ہلاکت کے خلاف بہ طور احتجاج ہڑتال کی جا رہی ہے۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی تازہ ویڈیو میں دکھایا گیا ہے کہ ایک آباد کار مغربی کنارے میں رام اللہ شہر کے مشرق میں واقع علاقے سے فلسطینی پرچم اتارنے کی کوشش کر رہا ہے۔

ویڈیو کے مطابق جب وہ جھنڈے کو اپنی جگہ سے ہٹانے کے لیے بھاگ رہا تھا لیکن اس کے راستے میں آنے والی بارودی سرنگ پھٹ گئی، جس کے نتیجے میں وہ ہلاک ہوگیا۔

دھماکے کی جگہ پر دھوئیں کے بادل بلند ہوتے دیکھے گئے ہیں تاہم اسرائیل کی طرف سے اس واقعے پر کوئی رد عمل سامنے نہیں آیا۔

یہ واقعہ مغربی کنارے میں خوف کی ایک رات کے بعد سامنے آیا ہے، جس میں طولکرم گورنری کے نور شمس کیمپ میں اسرائیلی آپریشن کے نتیجے میں 14 فلسطینیوں کو ہلاک کیا گیا۔

فلسطینیوں کی ہلاکتوں کے بعد غرب اردن میں آج اتوار کو ہمہ گیر ہڑتال کی جا رہی ہے جس نے نظام زندگی کو مفلوج کردیا ہے۔ تعلیمی ادارے، سڑکوں پر ٹریفک اور کاروباری مراکز بند ہیں۔

قابل ذکر ہے کہ غزہ پر اسرائیلی جنگ شروع ہونے کے بعد سے مغربی کنارے میں تشدد میں اضافہ ہوا ہے جو کہ جنگ سے پہلے ہی کشیدگی کی لپٹی میں تھا۔ غرب اردن میں اسرائیلی فوج کی کارروائیوں اور یہودی آبادکاروں کے فلسطینیوں پر حملوں کا سلسلہ ایک عرصے سے معمول بنا ہوا ہے۔ البتہ غزہ جنگ شروع ہونے کے بعد تشدد کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں