اسرائیل میں اسماعیل ھنیہ کی ہمشیرہ کے خلاف فرد جرم عائد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

اسرائیلی ریاست کے اٹارنی نے فلسطینی تحریک مزاحمت کے سربراہ اسماعیل ھنیہ کی ہمشیرہ کے خلاف فرد جرم عائد کر دی ہے ۔ ہمشیرہ پہ الزام لگایا گیا ہے کہ انہوں نے مبینہ طور پر دہشتگردی کے لئے اکسایا اور اس کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا تھا ۔ ستاون سالہ صباح السلیم ھنیہ اسرائیل کےجنوبی شہر ٹل شیوا میں رہتی ہیں جبکہ ان کے بھائی اسماعیل ھنیہ قطری دارالحکومت دوحہ میں مقیم ہیں ۔ قطر میں اسماعیل ھنیہ کے ساتھ حماس کے بعد دوسرے رہنما مقیم ہیں واضح رہے کہ فلسطینی مزاحمتی گروپ حماس غزہ میں حکمران ہے اور اسرائیل اس کے خاتمے کے لئے پچھلے سات ماہ سے حالت جنگ میں ہے۔

صباح السلیم ھنیہ کو یکم اپریل کو حراست میں لیا گیا تھا ابھی تک صباح السلیم کے وکیل نے ابھی تک اس پہ کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے ۔ مبینہ طور پر اسماعیل ھنیہ کی ہمشیرہ نے سات اکتوبر کے حماس کے حملہ کے بعد سوشل میڈیا کے ذریعے درجنوں پیغامات بھیجے اور اپنے بھائی کو اور اس حملے کو خراج تحسین پیش کیا ۔ ان کی طرف سے بھیجے گئے ایک پیغام میں کہا گیا تھا اللّٰہ ان سے حساب لو اور انہیں ہلاک کر دو ۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں