امریکیوں سے ہماری وقتاً فوقتاً ملاقاتیں سود مند ثابت نہیں ہوئیں:بشارالاسد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام کے صدر بشار الاسد نے انکشاف کیا ہے کہ ان کے ملک اور امریکہ کے درمیان وقتاً فوقتاً ملاقاتیں ہوتی رہتی ہیں تاہم ان ملاقاتوں کا کوئی فائدہ نہیں ہواا۔

بشار الاسد نے کل اتوار کو "ابخاز کے وزیر خارجہ انال اردنبا کے ساتھ سیاسی اور فکری مکالمے" کے دوران مزید کہا کہ "ہمیں اس وقت بھی کوشش کرنی چاہیے جب ہم جانتے ہوں کہ کوئی نتیجہ نہیں نکلے گا کیونکہ سیاست میں کچھ بھی ممکن ہے‘‘۔

شامی خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق انہوں نے کہا کہ "امریکہ اس وقت ہماری زمینوں کے ایک حصے پر قابض ہے، لیکن ہم وقتاً فوقتاً ان سے ملاقاتیں کرتے رہتے ہیں، حالانکہ یہ ملاقاتیں ہمیں کوئی فائدہ نہیں دیتیں‘‘۔

’’مغرب سے بات چیت سے امید‘‘

اس سوال کے جواب میں کہ آیا مغرب کے ساتھ بات چیت دوبارہ شروع کرنے کا کوئی موقع ہےتو بشارالاسد نے کہا کہ ’’ہمیشہ امید ہوتی ہے، یہاں تک کہ جب ہم جانتے ہیں کہ کوئی نتیجہ نہیں نکلے گا پھر بھی ہمیں کوشش کرنی ہوگی"۔

انہوں نے مزید کہا کہ "ہمیں ان کے بارے میں ہماری بری رائے سے قطع نظر ان کے ساتھ مل کر کام کرنا چاہیے اور انھیں سمجھانا چاہیے کہ ہم اپنے حقوق سے دستبردار نہیں ہوں گے۔ ہم ان کے ساتھ صرف برابری کی بنیاد پر تعاون کریں گے۔ زمینیں، دہشت گردی کی مالی معاونت اور اسرائیل کی حمایت جو ہماری زمینوں پر بھی قابض ہےکے بارے میں بات کے لیے ہم وقتاً فوقتاً ان سے ملتے ہیں"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں