اونروا میں غیر جانبداری کے 'مضبوط' اقدامات موجود لیکن مسائل برقرار ہیں: جائزہ رپورٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

فلسطینی پناہ گزینوں کے لیے اقوامِ متحدہ کی امدادی ایجنسی (اونروا) کے ایک جائزے سے معلوم ہوا ہے کہ اس کے پاس انسانی ہمدردی کی غیرجانبداری کے اصولوں کی تعمیل کو یقینی بنانے کے لیے مضبوط فریم ورک موجود ہے اگرچہ مسائل برقرار ہیں۔

یہ رپورٹ جو کچھ عطیہ دہندگان کو فنڈنگ کے تعطل پر نظرِثانی کرنے پر آمادہ کر سکتی ہے، اس میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ اسرائیل نے تاحال اپنے اس دعوے کے لیے معاون ثبوت فراہم نہیں کیے ہیں کہ اونروا عملے کی ایک قابلِ ذکر تعداد کا تعلق دہشت گرد تنظیموں سے تھا۔

اقوامِ متحدہ نے فروری میں فرانس کی سابق وزیرِ خارجہ کیتھرین کولونا کو غیر جانبداری کے جائزے کی قیادت کرنے کے لیے مقرر کیا جب اسرائیل نے الزام لگایا کہ اونروا کے عملے کے 12 افراد نے حماس کی قیادت میں سات اکتوبر کو اسرائیل پر حملوں میں حصہ لیا تھا جس سے غزہ جنگ شروع ہوئی۔

اقوامِ متحدہ کا ایک نگران ادارہ ایک الگ تفتیش میں 12 اونروا عملے کے خلاف الزامات کی تحقیقات کر رہا ہے۔

رائٹرز نے کولونا کے زیرِ قیادت جائزے کی حتمی رپورٹ کی ایک نقل کا جائزہ لیا جو پیر کو بعد میں باضابطہ طور پر جاری ہونے والی ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مارچ میں فراہم کردہ اونروا عملے کی ایک فہرست کی بنیاد پر اسرائیل نے عوامی دعوے کیے تھے کہ اونروا عملے کی "ایک قابلِ ذکر تعداد دہشت گرد تنظیموں کے اراکین" پر مشتمل تھی۔

رپورٹ میں کہا گیا، "البتہ اسرائیل نے ابھی تک اس کے لیے معاون ثبوت فراہم نہیں کیے ہیں۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں