یرغمالیوں کی واپسی تک لڑائی بند نہیں کریں گے: اسرائیلی وزیردفاع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی وزیر دفاع یوو گیلنٹ نے کہا ہے کہ غزہ کی پٹی میں اس وقت تک لڑائی جاری رہے گی جب تک حماس اور فلسطینی دھڑوں کے ہاتھوں میں یرغمالیوں کی واپسی نہیں ہو جاتی۔ گیلنٹ نے پلیٹ فارم ’’ ایکس‘‘ پر کہا یرغمالیوں میں سے 133 کو اپنے وطن واپس جانا چاہیے۔ ہم لڑائی بند نہیں کریں گے۔ انہوں نے دنیا بھر میں اپنے دوست ملکوں سے اسرائیلی یرغمالیوں کی واپسی کے لیے کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا۔

مذاکرات میں تعطل

اسرائیلی ویب سائٹ (Ynet) نے جمعرات کو اطلاع دی ہے کہ سیاسی اور سکیورٹی کابینہ کا اجلاس تقریباً ڈھائی گھنٹے کی بات چیت کے بعد ختم ہوا۔ اس اجلاس میں حماس کے ساتھ قیدیوں کے تبادلے کے حوالے سے معاہدے کے خاکے پر غور کیا گیا۔ ویب سائٹ نے بتایا کہ تل ابیب میں وزارت دفاع کے ہیڈ کوارٹرز میں منعقد ہونے والی اس ملاقات میں حماس پر دباؤ ڈالنے کے لیے ایک "مضبوط فوجی بازو" کی ضرورت پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ یہ فوجی ونگ منصوبہ بندی کے مطابق رفح میں آپریشن کرے گا۔

رفح پر بمباری میں شدت

دریں اثنا اسرائیل نے رفح پر فضائی بمباری تیز کردی ۔ اسرائیل نے کہا ہے کہ وہ اپنے اتحادیوں کے انتباہ کے باوجود جنوبی غزہ کی پٹی میں واقع شہر رفح سے شہریوں کو نکالے گا اور ایک بڑا حملہ شروع کرے گا۔ غزہ میں صحت کے حکام نے جمعرات کو بتایا کہ اسرائیلی فضائی بمباری اور گولہ باری میں 34305 فلسطینی شہید ہو چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں