’نیوم‘ میں مرجانی چٹانوں کی بحالی سائنسی تحقیقی پروگرام کا آغاز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مرجان کی چٹانوں کے مستقبل کو محفوظ رکھنے کی سعودی عرب کی مساعی کے فریم ورک کے اندر کنگ عبداللہ یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی (KAUST) نے ’نیوم‘ پروجیکٹ کے تعاون سے سعودی عرب میں "KAUST Coral Reef" کے نام سے مرجان کی چٹانوں کی بحالی کے ایک سائنسی تحقیقی پروگرام کا آغاز کیا گیا ہے جو اپنی نوعیت کا منفرد پروگرام ہے۔

اس اقدام میں ایک مرجان کی چٹان کی افزائش کی سہولت شامل ہے جو مملکت کے شمال مغرب میں نیوم کے ساحل پر تعمیر کی گئی تھی۔ یہ پروگرام مرجان کی چٹانوں کو بحال کرنے کی کوششوں میں اس کی سالانہ 40 ہزار تک مرجان کے بیجوں کی پیداواری صلاحیت کے ذریعے ایک معیاری تبدیلی لائے گا۔

سعودی پریس ایجنسی’ایس پی اے‘ کے مطابق ایک اہم تجرباتی سہولت کے طور پر محققین مستقبل میں مرجان کی چٹانوں کو بحال کرنے کے لیے بڑے پیمانے پر اقدامات کو ڈیزائن کرنے میں اس سے فائدہ اٹھانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

یہ سہولت ایک زیادہ ہمہ جہت منصوبے کے لیے پہلا بلڈنگ بلاک بھی ہے کیونکہ یہ دنیا کی سب سے بڑی زمینی مرجان نرسری کی تعمیر پر مشتمل ہے اور اس میں مرجان کی چٹانوں کو بحال کرنے کے لیے جدید ترین ٹیکنالوجیز دستیاب ہیں۔پیداواری صلاحیت دس گنا زیادہ ہے۔

یہ اقدام 100 ہیکٹر کی جگہ کے اندر شروع کیا جا رہا ہے۔ اس میں دو ملین مرجان کے ٹکڑے شامل ہیں۔یہ ماحولیاتی تحفظ کی کوششوں میں ایک اہم قدم کی نمائندگی کرتا ہے۔ اس تناظر میں بحیرہ احمر میں مرجان کی چٹانوں کو بحال کرنے کا KAUST اقدام یونیورسٹی کی جامع حکمت عملی اور اس کی کاوشوں اور سائنسی تحقیقات کا حصہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں