بل اینڈ میلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن کی صحت کی مہم کےتحت عازمینِ حج کوپولیو ویکسین دی جائےگی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

بل اینڈ میلنڈا گیٹس فاؤنڈیشن کے تعاون سے بیماری پر قابو پانے کی مہم کے تحت جون میں سعودی عرب جانے والے عازمینِ حج کی صحت کو بہتر کیا جائے گا جو پولیو کے خاتمے کی وسیع تر کوششوں کا حصہ ہے۔

گیٹس فاؤنڈیشن نے اتوار کو کہا کہ وہ سعودی عرب کی وزارتِ صحت کے ساتھ ایک نئی شراکت داری کو منظم کرنے کے لیے ریاض میں ایک علاقائی دفتر کھولے گا۔ اس کا مقصد ہے کہ بیماریوں کی نگرانی اور صحت و صفائی کو بہتر بنایا جائے اور لاکھوں مسلمانوں کی صحت اور حفاظت کو بہتر بنانے کے لیے کم تر قیمت والی ویکسین کی تیاری میں مدد کی جائے جو دنیا کے ایک سب سے بڑے مذہبی اجتماع یعنی حج میں شرکت کر رہے ہیں۔

پولیو پھیلنے کے متعدد واقعات کا تعلق ماضی میں مقدس شہروں مکہ اور مدینہ کی زیارتوں سے رہا ہے۔ معذوری کی وجہ بننے والی یہ بیماری جو ہزاروں سال سے زندگی کے لیے خطرناک فالج کی وجہ رہی ہے، 2022 میں ختم ہونے کے قریب پہنچ گئی تھی کہ افریقہ میں نئی وباء پھیل گئی اور اسی سال نیویارک میں ایک شخص مفلوج ہو گیا۔

اس سال پولیو کیسز میں اب تک کی کمی سے امید کو تقویت ملی ہے کہ 2026 تک عالمی سطح پر پولیو کے خاتمے کا اقدام مکمل ہو جائے گا۔ گیٹس فاؤنڈیشن نے ایک ای میل بیان میں کہا کہ سعودی عرب نے اس اقدام کے 36 سالہ مشن کے لیے اگلے پانچ سالوں میں 500 ملین ڈالر دینے کا وعدہ کیا ہے۔

ریاض میں عالمی اقتصادی فورم کے خصوصی اجلاس میں اس اقدام کے لیے جن مالی وعدوں کا اعلان کیا گیا، وہ اس فنڈنگ سے بڑھ کر 620 ملین ڈالر سے زیادہ ہو گئے ہیں۔

گیٹس فاؤنڈیشن نے کہا کہ سعودی عرب لائیوز اینڈ لائیولی ہڈ فنڈ (Lives and Livelihoods Fund) میں بھی 100 ملین ڈالر دے گا جو شرقِ اوسط میں سب سے بڑا کثیرالجہتی ترقیاتی اقدام ہے۔ یہ اقدام بنیادی صحت کی نگہداشت اور قابلِ انسداد متعدی بیماریوں کو ختم کرنے کی کوششوں کی معاونت کرتا ہے۔

سابقہ اہلیہ میلنڈا فرنچ گیٹس کے ساتھ فاؤنڈیشن کے شریک چیئرمین بل گیٹس نے کہا، "پولیو ایک خوفناک بیماری ہے جو ہمیشہ ہمیشہ کے لیے تاریخ کی کتابوں میں شامل ہونے کے لائق ہے۔"

نیز انہوں نے کہا، "مجھے یہ دیکھ کر فخر محسوس ہوا ہے کہ شرقِ اوسط کے شراکت داروں کے ساتھ مل کر سعودی مملکت ہر سال لاکھوں بچوں کو پولیو ویکسین، خسرہ کے خلاف قوتِ مدافعت اور صحت کی دیگر اہم خدمات فراہم کرنے میں مدد کے لیے قدم بڑھا رہی ہے۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں