امریکہ اسرائیل-حماس جنگ بندی معاہدے تک پہنچنے کے لیے ’پرعزم‘ ہے: بلنکن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی وزیرِ خارجہ انٹونی بلنکن نے بدھ کے روز حماس سے جنگ بندی معاہدہ قبول کرنے کا مطالبہ کیا جب انہوں نے اسرائیل کی قیادت کے ساتھ بات چیت شروع کی۔

بلنکن نے اسرائیلی صدر اسحاق ہرتصوغ سے ملاقات کے دوران کہا، "ایسے انتہائی مشکل اوقات میں بھی ہم جنگ بندی اور ابھی اس تک پہنچنے کے لیے پرعزم ہیں جس سے یرغمالی گھر واپس آ جائیں۔ اور اس معاہدے تک نہ پہنچنے کی واحد وجہ حماس ہے۔"

حماس اس پیشکش کا جواب دینے کے لیے تیار ہے جس میں اسرائیل غزہ میں اپنی جارحیت کو عارضی طور پر روک دے گا اور سات اکتوبر کے یرغمالیوں کے عوض فلسطینی قیدیوں کو رہا کرے گا۔

جنوبی رفح فائل فوٹو
جنوبی رفح فائل فوٹو

اپنے دورے کے دوران بلنکن غزہ کی پٹی میں امداد بڑھانے کی کوششوں پر بھی زور دے رہے ہیں جہاں اقوامِ متحدہ نے اسرائیلی محاصرے کے نتیجے میں خوراک کی شدید قلت کے باعث قریبی قحط سے خبردار کیا ہے۔

وہ بدھ کے بعد وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو سے ملاقات کریں گے اور غزہ کے قریب ایک بندرگاہ اشدود سمیت دیگر مقامات پر رکیں گے جسے حال ہی میں اسرائیل نے امداد کے لیے دوبارہ کھولا ہے۔

بلنکن نے ہرتصوغ سے کہا، "ہمیں ان لوگوں پر بھی توجہ مرکوز کرنی ہے جو اس دوطرفہ جنگ کی وجہ سے مصائب کا شکار ہیں۔"

منگل کے روز بلنکن نے اردن کے امدادی قافلے کو رخصت کیا جو اسرائیل اور غزہ کے درمیان دوبارہ کھولی گئی ایریز گذرگاہ کی طرف جا رہا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں