سعودی کابینہ نے پاکستان کے ساتھ انسداد دہشت گردی تعاون کے معاہدے کی منظوری دے دی

کابینہ کے اجلاس میں وژن 2030 کے اہداف کے حصول کی تحسین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب کے ولی عہد ولی عہد اور وزیر اعظم شہزادہ محمد بن سلمان کی سربراہی میں کابینہ کےمنگل کے روز ہونے والے اجلاس میں مقامی امور سے متعلق متعدد رپورٹس کا جائزہ لیا گیا۔

اس موقعے پر متعدد معاہدوں کی سرکاری سطح پر منظوری دی گئی جن میں پاکستان کے انٹیلی جنس اداروں اور سعودی عرب کے اسٹیٹ سکیورٹی ادارے کے درمیان دو طرفہ تعاون کے معاہدے کی منظوری دی گئی۔

اجلاس میں "سعودی وژن 2030" کے اقدامات اور اشاریوں میں بہتری کے ساتھ اہداف کی بھی تعریف کی گئی۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ وژن 2030 کےشروع کئے جانے کے آٹھویں سال میں مختلف سطحوں پر کامیابیاں حاصل کیں جن میں تعلیم، صحت، رہائش اور بنیادی ڈھانچے کے ساتھ ساتھ روزگار کے وسیع مواقع پیدا کرنا، قومی معیشت کے تنوع کی رفتار کو تیز کرنا، امید افزا شعبے کی ترقی، خواتین اور نوجوانوں کو بااختیار بنانے کے علاوہ سب کے لیے معیار زندگی کو بہتر بنانا جیسے شعبوں میں وضع کردہ اہداف پورے ہوئے ہیں۔

اس کے علاوہ ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی سربراہی میں وزراء کونسل نے عالمی اقتصادی فورم کے خصوصی اجلاس کے مندرجات کی تعریف کی، جس کی میزبانی سعودی عرب نے حال ہی میں "بین الاقوامی تعاون، نمو، اور ترقی کے لیے توانائی" کے عنوان سے کی تھی۔

کونسل نے مدینہ منورہ میں منعقدہ عمرہ اور وزٹیشن فورم کے مندرجات پر بھی غور کیا جس کا مقصد مستقبل کے اقدامات اور ترقیاتی منصوبوں کا آغاز کرکے ضیوف الرحمان کے سفر کو نئے افق تک پہنچانے میں معاونت فراہم کرنا ہے تاکہ انہیں عبادات اور مناسک کی ادائی میں آسانی اور سہولت فراہم کی جا سکے۔

کابینہ کو سیاسی اور اقتصادی تعاون کے شعبوں کو وسعت دینے کے لیے دو طرفہ اور کثیر جہتی سطحوں پر مملکت اور مختلف ممالک کے درمیان گذشتہ دنوں ہونے والے مجموعی مذاکرات کے بارے میں بھی بریفنگ دی گئی۔

بین الاقوامی سطح پر کابینہ کے حالیہ اجلاس میں مملکت کی طرف سے برادر اور دوست ممالک کے تعاون سے غزہ کی پٹی میں جنگ روکنے اور جنگ سےمتاثرہ شہریوں کو امداد کی فراہمی کے لیے کی گئی کوششوں پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

وزراء کونسل نے سعودی عرب میں پریزیڈنسی آف اسٹیٹ سکیورٹی اور اسلامی جمہوریہ پاکستان میں جنرل انٹیلی جنس سروس کے درمیان دہشت گردی کے جرائم اور اس کی مالی معاونت سے نمٹنے کے شعبے میں تعاون کے معاہدے کی منظوری دی۔ اسی طرح سعودی عرب میں انسداد بدعنوانی کے ادارے اور بھارتی انسداد بدعنوانی اتھارٹی کے درمیان تعاون کی بھی منظوری دی گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں