امریکہ میں کیمپس احتجاج کے درمیان عراقی طلباء کی غزہ کے لیے ریلی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اے ایف پی کے نامہ نگاروں نے بتایا کہ عراقی یونیورسٹیوں کے درجنوں طلباء اور پروفیسروں نے غزہ اور امریکی یونیورسٹیوں میں فلسطینیوں کے حامی مظاہروں سے اظہارِ یکجہتی کے لیے بغداد کیمپس میں ریلی نکالی۔

عراقی وزیرِ تعلیم نعیم العبودی نے اس ہفتے کے شروع میں دنیا کے طول و عرض میں "یونیورسٹیوں میں آزاد آوازوں" کے لیے اپنی حمایت کا اظہار کیا اور غزہ کی پٹی کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کے لیے مظاہروں کی اپیل کی۔

النہرین یونیورسٹی کے طلباء نے فلسطینی اور عراقی پرچم لہرائے۔

20 سالہ طالبہ آیا قادر نے کہا،"غزہ میں ہمارے لوگوں کے ساتھ جو کچھ ہو رہا ہے تو یقیناً میں اپنی آواز اٹھانے کے لیے آنے والے اولین لوگوں میں شامل ہوں گی۔"

انہوں نے کہا، "امریکی یونیورسٹیوں میں فلسطینی پرچم لہراتے دیکھنا بہت مثبت ہے۔"

انہوں نے مزید کہا، "ہفتوں سے جاری فلسطینیوں کے حامی مظاہرے جنہوں نے پورے امریکہ میں تعلیمی کیمپس کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے نے "ہماری حوصلہ افزائی کی" ہے۔

طلباء اور پروفیسرز نے "آزاد فلسطین" کا مطالبہ کرنے والے بینرز بھی اٹھا رکھے تھے جن میں سے کچھ نے کوفیہ سکارف پہنے ہوئے تھے جو طویل عرصے سے فلسطینی مقصد کی علامت بن چکے ہیں۔

انجینئرنگ فیکلٹی کے سربراہ پروفیسر جمعہ سلمان نے کہا، "ہم یہاں انہیں یہ بتانے کے لیے کہ قتل کرنا روک دیں اور دنیا بھر میں آزاد آوازوں کا شکریہ ادا کرنے کے لیے آئے ہیں۔"

نیز انہوں نے کہا، "اگر کولمبیا یونیورسٹی کا طوفان کسی اور ملک میں ہوتا، بالخصوص تیسری دنیا کے کسی ملک میں تو وہ زمین آسمان ایک کر دیتے۔"

واشنگٹن میں عراقی سفارت خانے نے بدھ کو "تحمل، سکون، انسانی حقوق کے احترام اور پرامن اظہارِ خیال" کا مطالبہ کیا کیونکہ غزہ میں اسرائیل کی جنگ پر امریکی کیمپس میں بےچینی پھیل گئی۔

عراق اسرائیل کو تسلیم نہیں کرتا جبکہ تمام عراقی سیاسی دھڑے فلسطینی عوام کی حمایت کرتے ہیں۔

2019 میں عراق میں حکمران اسٹیبلشمنٹ کے خلاف عوامی مظاہرے پھوٹ پڑے اور سکیورٹی کریک ڈاؤن کے نتیجے میں 600 سے زائد افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

امریکہ اسرائیل کے لیے فوجی ساز و سامان کا سب سے بڑا فراہم کنندہ ہے۔

امریکی کیمپس میں طلباء مظاہرین کہتے ہیں کہ وہ جنگ سے تباہ حال غزہ کی پٹی میں فلسطینیوں کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کر رہے ہیں جس کی وجہ سے پولیس نے بڑے پیمانے پر گرفتاریاں کیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں