کسی فریق کے طرف دار نہیں، سوڈانی عوام کا مفاد ہر چیز پرمقدم ہے: سعودی عرب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

جدہ مذاکرات کو دوبارہ شروع کرنے اور سوڈان میں ایک سال سے زائد عرصے سے جاری تنازع کے خاتمے کے لیے حل تلاش کرنے کی کوششوں کےجلو سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے خود مختار کونسل کے صدر عبدالفتاح البرھان اور ریپڈ سپورٹ فورسز کے سربراہ محمد حمدان دقلو"حمیدتی" سے الگ الگ ٹیلیفون پر بات کی۔

سوڈانی عوام کا مفاد مقدم

دونوں رہ نماؤں کے ساتھ گفتگو میں شہزادہ فیصل بن فرحان نے سوڈان اور اس کے عوام کو تباہی سے بچانے کے لیے مزید محنت کرنے کی اہمیت پر زور دیا۔

انہوں نے لڑائی کو روکنے اور سوڈانی عوام کے مفادات کو ترجیح دینے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔

یہ بیان اس وقت سامنے آیا جب شہزادہ فیصل بن فرحان نے چند روز قبل اپنے امریکی ہم منصب انٹونی بلنکن کے ساتھ سوڈان میں تنازع کے خاتمے کے لیے جدہ مذاکرات دوبارہ شروع کرنے پر بات کی تھی۔

سوڈان کے تنازعے کے دونوں فریقوں کے درمیان خانہ جنگی کے خاتمے کے لیے علاقائی اور اندرونی دباؤ کے درمیان اس مئی میں سعودی عرب کے شہر جدہ میں دوبارہ مذاکرات شروع کرنے کی توقع ہے۔

سوڈانی امید کرتے ہیں کہ یہ مذاکرات سفارتی تعطل اور بڑھتی ہوئی لڑائی کی روشنی میں ایک جامع اور حتمی حل کی طرف لےجانے میں مدد گار ثابت ہوں گے۔

جنگ کا ایک سال اور ہزاروں اموات

یہ بات قابل ذکر ہے کہ سوڈان میں اپریل 2023ء کے وسط سے شروع ہونے والی جنگ کے نتیجے میں اقوام متحدہ کے ماہرین کے مطابق صرف مغربی دارفر ریاست کے دارالحکومت الجینینہ میں 15,000 افراد سمیت ہزاروں اموات ہوئیں۔

جنگ نے 48 ملین لوگوں کے ملک کو بھی قحط کے دہانے پر دھکیل دیا۔ پہلے سے خستہ حال انفراسٹرکچر کو تباہ کر دیا، اور 8.5 ملین سے زیادہ لوگوں کو بے گھر کر دیا۔

اقوام متحدہ نے کہا ہے کہ تقریباً 25 ملین افراد جوسوڈان کی نصف آبادی کے برابر ہیں کو امداد کی اشد ضرورت ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں