دمشق کے نواح میں اسرائیلی حملے کے نتیجے میں آٹھ فوجی زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام کے ایک فوجی ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ دمشق کے آس پاس کی ایک "اسرائیلی حملے" حملے کے نتیجے میں کم سے کم آٹھ فوجی زخمی ہوئے ہیں۔

عرب عالمی خبر رساں ایجنسی کے مطابق شام کے ٹیلی ویژن نے ایک نامعلوم فوجی ذریعے کے حوالے سے بتایا کہ اسرائیل نے گولان کی سمت سے فضائی حملہ کیا، جس کے نتیجے میں کچھ مادی نقصان بھی ہوا۔

اپریل کے اوائل میں دمشق میں ایرانی قونصل خانے پر اسرائیلی حملے کے نتیجے میں پاسداران انقلاب کے دو سینیر کمانڈروں سمیت کم سے کم سات افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ اس واقعے کے بعد ایران اور اسرائیل ایک دوسرے کے خلاف حالت جنگ میں آگئے تھے۔

سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے مطابق پاسداران انقلاب کے تقریباً 3,000 جنگجو اور فوجی مشیر شام میں تعینات ہیں۔

لیکن تہران صرف ان مشیروں کی بات کرتا ہے جو عراق، اردن، لبنان اور اسرائیل کی سرحدوں پر واقع علاقوں میں حکومتی افواج کی مدد کرتے ہیں۔

لبنانی حزب اللہ اور سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے قریبی ذرائع کے مطابق ایران نے اسرائیل کے حملوں کے بعد شام میں اپنی فوجی موجودگی کو کم کر دیا۔

حزب اللہ کے قریبی ذرائع نے ایجنسی ’اے ایف پی‘ کو بتایا کہ ایرانی افواج نے جنوبی شام کے علاقے کو خالی کر دیا اور دمشق کے دیہی علاقوں، درعا اور قنیطرہ میں گذشتہ ہفتوں کے دوران اپنی پوزیشنوں سے پیچھے ہٹ گئے"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں