سعودی عرب: بیشہ کے مقام پر پانی میں تیراکی کرتے ہوئے دو کم عمر بھائی ڈوب کرجاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی بیشہ گورنری کے قریب الغفرات گاؤں میں دو حقیقی بھائی عبدالعزیز اور فیصل الدخیل اللہ دریا میں تیراکی کرتے ہوئے پانی میں بہہ کر ڈوب گئے۔ دو بچوں کی حادثاتی موت پر خاندان شدید صدمے سے دوچار ہے۔ دوسری طرف شہری دفاع نے شہریوں کو ایک بار پھر خبردار کیا ہے کہ وہ سیلابی ریلوں، ندیوں، نالوں اور پانی کے راستوں کے علاقوں کے قریب جانے سے گریز کریں۔

تفصیلات کے مطابق دونوں بھائیوں کے خاندان کے ایک رشتہ دار عید القیط نے "العربیہ ڈاٹ نیٹ" کو بتایا کہ یہ دونوں بچےسیلاب میں تیراکی کرتے تھے اور یہ پہلی بار نہیں ہے۔ تاہم ان کے والد کو معلوم نہیں تھا کہ وہ ندی میں تیرنے جا رہے تھے۔ خبردار کرنے کے باوجود ان دونوں نوجوانوں نے کسی کی بات نہیں مانی۔ ان کی اپنے والد سے موت سے ایک گھنٹہ پہلے آخری ملاقات ہوئی جس کے بعد وہ ندی پر چلے گئے تھے۔

اس نے کہا کہ "عبدالعزیز کالج آف ٹیکنالوجی میں پڑھتا تھا، جب کہ فیصل سیکنڈری اسکول میں تھا۔ وہ خاندان کے دو بہترین نوجوان تھے۔عبدالعزیزکی لاش حادثے کے دوسرے دن مل گئی۔ بعد میں شہری دفاع کےعملے اور شہریوں کی کوششوں سے فیصل کی لاش بھی مل گئی۔

دوسری طرف سول ڈیفنس نے سیلابی راستوں میں بیٹھنے اور علاقوں کو عبور کرنے، یا بچوں کو ان علاقوں کے آس پاس اکیلا چھوڑنے کے خلاف خبردار کیا ہے۔

انہوں نے ایک آگاہی گرافک ویڈیو میں مزید کہا کہ پانی کے تالابوں کے قریب آنے سے کوئی ان میں گر سکتا ہے۔ چونکہ اس کے کنارے عموماً کمزور ہوتے ہیں اور ٹوٹ سکتے ہیں اور پانی ٹوٹی ہوئی سڑک یا دھلے ہوئے پل کو ڈھانپ سکتا ہے اس لیے احتیاط اور توجہ کی ضرورت ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں