جنوبی لبنان پر اسرائیلی حملے میں دو افراد ہلاک: رپورٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

لبنان کے سرکاری میڈیا نے کہا کہ جمعہ کے روز جنوبی لبنان پر اسرائیلی حملے میں حزب اللہ کی اتحادی تحریک سے وابستہ ایک ریسکیو گروپ کا پہلی کال پر لبیک کہنے والا اہلکار اور بحالی کے کام میں مصروف ایک ٹیلی کام ٹیکنیشن ہلاک ہو گیا۔

اسرائیل اور لبنان کی ایرانی حمایت یافتہ اور حماس کی اتحادی حزب اللہ کے درمیان سات اکتوبر کو جنوبی اسرائیل پر حماس کے حملے کے بعد سرحد پار سے تقریباً روزانہ فائرنگ کا تبادلہ ہوتا ہے۔

لبنان کی قومی خبر رساں ایجنسی نے کہا کہ "طیر حرفا پر اسرائیلی جارحیت کے نتیجے میں" رسالہ سکاؤٹ ایسوسی ایشن کا ایک ریسکیو اہلکار اور پاور ٹیک کمپنی کا ایک ٹیکنیشن ہلاک ہو گئے۔ یہ کمپنی نجی موبائل سروس فراہم کرنے والے ایم ٹی سی ٹچ کے لیے بحالی اور مرمت کا کام کرتی ہے۔

نیشنل نیوز ایجنسی نے کہا کہ ٹچ اور اوجیرو ٹیلی کام فراہم کنندہ کے کارکنان "ٹرانسمیشن پولز کی دیکھ بھال" کر رہے تھے۔ نیز ایجنسی نے کہا کہ انہوں نے لبنان میں اقوامِ متحدہ کے امن مشن (یونی فِل) سے اجازت طلب کی تھی۔

امل تحریک سے وابستہ رسالہ اسکاؤٹ ایسوسی ایشن جو جنوبی لبنان میں ریسکیو ٹیمیں چلاتی ہے، نے کہا کہ ریسکیو اہلکار اس وقت مارا گیا جب ان کی ٹیم اسرائیلی بمباری کی زد میں آنے والے مقام پر گئی۔

ایسوسی ایشن کے ایک ذریعے نے اے ایف پی کو بتایا، "دوسرا حملہ تیزی سے ہوا اور دو میں سے ایک نوجوان شہید ہو گیا۔"

ایم ٹی سی ٹچ کے ایک ذریعے نے بتایا کہ حملے میں ایک ٹیم نشانہ بنی جو طیر حیفا میں دیکھ بھال کا کام کر رہی تھی۔

ایک ذریعے نے جسے میڈیا سے بات کرنے کی اجازت نہ تھی، نام ظاہر نہ کرنے کی درخواست کرتے ہوئے اے ایف پی کو بتایا، "ہمارا ان سے رابطہ منقطع ہو گیا کیونکہ سٹیشن نشانہ بنا تھا۔"

ذریعے نے مزید کہا، "ہماری ٹیم اور ایک اور کمپنی کے لوگ تھے جو ہمارے لیے دیکھ بھال کا کام کرتی ہے اور پیرامیڈیکس بھی تھے۔"

اے ایف پی کے اعداد و شمار کے مطابق لبنان میں سرحد پار سے ہونے والے تشدد کے سات ماہ کے دوران کم از کم 402 افراد ہلاک ہو چکے ہیں جن میں زیادہ تر مزاحمت کار تھے لیکن 79 عام شہری بھی شامل تھے۔

اسرائیل کہتا ہے کہ اس کی سرحد پر 14 فوجی اور نو شہری مارے گئے ہیں۔ اس ہفتے تین فوجی مارے گئے جن میں سے ایک بدھ کو ہلاک ہوا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں