رفح : بارودی سرنگوں سے ٹکرا کر تین اسرائیلی فوجی زخمی ہو گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوجی جمعرات کے روز اس وقت بارودی سرنگوں کی وجہ سے زخمی ہو گئے جب وہ رفح میں تعیناتی کے بعد سر گرم عمل تھے۔ اسرائیلی فوج کی طرف سے اپنے تین فوجیوں کے ' بوبی ٹریپس' کے سبب زخمی ہونے کی جمعرات کے روز ہی تصدیق کی گئی ہے۔

اسرئیل کی فوج نے اس بارے میں جاری کردہ بیان میں کہا ہے' جمعرات کے روز تین فوجی زخمی ہوئے ہیں۔ یہ واقعہ مشرقی رفح میں ' بوبی ٹرپیس' کی وجہ سے پیش آیا ہے۔ تاہم فوج کے اعلان میں کہا گیا ہے کہ فوجیوں کے جسموں پر آنے والے زخم معمولی ہیں۔

اسرائیلی فوج کی طرف سے فوجیوں کے زخمی ہونے کے واقعے بارے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے' ان زخمی ہونے والے فوجیوں کو بارودی سرنگوں کی جائے دھماکہ سے نکال لیا گیا ہے اور ہسپتال پہنچا دیا گیا ہے۔

اسرائیلی فوجیوں کے زخمی ہونے کی یہ خبر ان غیر ملکی بیانات کے بعد سامنے آئی ہے جن میں رفح میں اسرائیل فوج کو زمینی جنگ کے لیے اتارنے کی مخالفت کی گئی ہے۔ اسرائیل جس نے رفح پر حملے کے لیے کئی ماہ تک تیاری کی ہے منگل کے روز کہا تھا کہ اس کی رفح میں جنگی حکمت عملی محدود جنگ کی اور ' ٹارگیٹڈ' نوعیت کی ہے۔

تاہم اسرائیل کی حکومت سمجھتی ہے کہ اس کے لیے رفح کی جنگ بہت اہم ہے۔ اس کے مطابق رفح میں حماس کی چار باقی ماندہ بٹالینز موجود ہیں ، جن کا خاتمہ اسرائیل کے لیے انتہائی ضروری ہے ، بصورت دیگر حماس کا خاتمہ ممکن نہ ہو گا۔ اسرائیل کے نزدیک اسرائیلی جیت کے لیے رفح میں بھی حماس کی تباہی ضروری ہے۔

واضح رہے اقوام متحدہ کی رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ رفح میں کم و بیش 14 لاکھ سے زیادہ فلسطینی پناہ گزین پناہ لیے ہوئے ہیں ، جن کی زندگیاں رفح میں تباہی سے دوچار ہوں گی اور ایک بڑا انسانی المیہ جنم لے سکتا ہے۔

نیز غزہ میں امدادی سامان کی ترسیل جاری رکھنے اور قحط زدہ غزہ میں خوراک پہنچانے کے لیے رفح راہداری انتہائی اہم ہے۔ واضح رہے پیر کے روز رفح میں اسرائیلی فوجی ٹینکوں کی آمد کے بعد اس راہداری پر اسرائیلی فوج نے قبضہ کر لیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں