سعودیہ میں حج کے دوران’ائر ٹیکسی‘ کی سہولت فراہمی پر پاکستان کی تحسین

سعودی حکام کا حج سیزن میں ’ہوائی ٹیکسیوں اور ڈرونز‘ کے آزمائشی منصوبے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سرکاری خبر رساں ایجنسی ایسوسی ایٹڈ پریس آف پاکستان (اے پی پی) نے خبر دی کہ اس سال حج کے موقع پر سعودی مملکت کے "ہوائی ٹیکسیوں اور ڈرونز" کے آزمائشی منصوبے کے اعلان کے بعد پاکستان کی وزارتِ مذہبی امور نے ہفتے کے روز اس بات کی تعریف کی کہ سعودی عرب مسلمانوں کے حج کے تجربے کو بہتر بنانے کے لیے جدید ٹیکنالوجی استعمال کرے گا۔

سعودی وزیر برائے نقل و حمل اور لاجسٹکس صالح الجاسر نے اس ہفتے کے شروع میں مملکت میں لوگوں کو بہترین سفری ذرائع فراہم کرنے کے لیے ٹرانسپورٹ کمپنیوں میں سخت مقابلے کے بارے میں بات کی۔ قبل ازیں انہوں نے یہ بھی کہا تھا کہ حج کے دوران ہوائی ٹیکسیوں اور ڈرونز کا تجربہ کیا جائے گا تاکہ عازمین کو زیادہ سے زیادہ سہولت فراہم کی جا سکے۔

کچھ اطلاعات کے مطابق سعودی ایئر لائنز عازمینِ حج کو جدہ ایئرپورٹ سے مکہ مکرمہ میں ان کے ہوٹلوں تک لے جانے کے لیے ہوائی ٹیکسیاں چلانے کے منصوبے پر بھی غور کر رہی تھی۔

پاکستان کی وزارتِ مذہبی امور کے ترجمان محمد عمر نے کہا، "جدید ٹیکنالوجی کے ذریعے حج کے تجربے کو جدید بنانے کے لیے سعودی عرب کا عزم ان کی لگن ظاہر کرتا ہے جو حجاج کے آرام اور سہولت کو یقینی بنانے کے لیے ہے۔"

عمر جو 2009 سے اپنے ملک کے حج آپریشنز میں قریبی طور پر شامل رہے ہیں، نے یہ بھی بتایا کہ کس طرح سعودی حکام نے حجاج کی مدد کے لیے مختلف موبائل ایپلی کیشنز متعارف کروائی تھیں۔

انہوں نے مزید کہا، "لاکھوں عازمینِ حج کے مقدس سفر میں سہولت فراہم کرنے میں سعودی حکومت کی لگن اور کوششوں کا میں نے ازخود مشاہدہ کیا ہے۔"

انہوں نے حجاج کی بڑی تعداد کے انتظام میں نمایاں بہتری اور سعودی حکام کی طرف سے عازمین کو بہتر سہولیات کی فراہمی پر بھی روشنی ڈالی۔

حج اسلام کے پانچ ستونوں میں سے ایک ہے اور ہر بالغ مسلمان مرد و عورت پر فرض ہے کہ مالی اور جسمانی طور پر استطاعت ہو تو وہ اپنی زندگی میں کم از کم ایک بار مکہ مکرمہ کے مقدس مقامات کا سفر کرے۔

پاکستانی وزارتِ مذہبی امور کے مطابق اس سال پاکستان میں 179,210 عازمینِ حج کا کوٹہ ہے۔ ان میں سے 63,805 عازمین سرکاری سکیم کے تحت حج کی سعادت حاصل کریں گے جبکہ باقی کو نجی ٹور آپریٹرز کے ذریعے رہائش دی جائے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں