غزہ میں فیلڈ ہسپتال قائم کیا ہے: اسرائیلی فوج کا بیان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بین الاقوامی فوجداری عدالت اور بین الاقوامی عدالت انصاف کی طرف سے چیلنجوں کا سامنا کرنے کے ساتھ ساتھ امریکہ و یورپ سےبھی بدنامی اور غم و غصہ پانے والی اسرائیلی فوج نے اپنے بدنما امیج کو بہتر بنانے کے لیے اس نے کچھ اقدامات دکھانا شروع کر دییے ہیں تاکہ وہ عالمی دباؤ کو کم کرنے کی سبیل نکال سے۔

اسرائیلی فوج نے اپنے امیج کے ' میک اپ ' کی کوشش اس وقت شروع کی ہیں جب وہ انتہائی گنجان آبادی کے شہر رفح پر ٹینکوں سے حملہ کرنے کو تیار کھڑی ہے۔ رفح کے مشرقی حصے کی گلیوں کے اندر تک ٹینک پہنچا دیے ہیں اور پورے مشرقی رفح کا اسرائیلی فوجی ٹینکوں نے محاصرہ کر لیا ہے۔

اس سے قبل غزہ میں اسرائیلی اب تک 35000 فلسطینیوں کو قتل کر چکی یے اور غزہ کے ہسپتال تک اس کی بمباریوں سے محفوظ نہیں رہ سکے۔حتی کہ زیر کنٹرول غزہ میں اجتماعی قبریں بھی سامنے ہوئی ہیں۔

تاہم غزہ میں بد ترین جنگ کے سات ماہ مکمل کرنے کے بعد اسرائیلی فوج نے ہفتے کے روز اعلان کیا ہے کہ اس نے جنوبی غزہ میں ایک عارضی فیلڈ ہسپتال قائم کرنے کی اجازت دی ہے۔

فوجی بیان کے مطابق اس فیلڈ ہسپتال میں بین الاقوامی طبی کارکن کام کریں گے۔ ہسپتال کی ایمرجنزی میں بیک وقت درجنوں بستروں کی سہولت موجود ہوگی۔ واضح رہے غزہ میں اس وقت لگ بھگ 80000 زخمی موجود ہیں مگر ان کے لیے غزہ میں کوئی موزوں ہسپتال کارآمد نہیں رہنے دیا ۔

غزہ کے ہر ہسپتال پر اسرئیلی حملے ہو چکے ہیں۔۔ اس کی ادویات اور دیگر اشیا کی ناکہ بند کر دی اور پانی و بجلی تک بند کر دیاور اس سلسلے کا انفراسٹرکچر مکمل تباہ کر دیا ہے۔ البتہ سات فیلڈ ہسپتال مختلف جگہوں پر کھڑے کیے گئے ہیں۔

تاہم اتنے عرصے کے بعداسرائیلی فوج نے فیلڈ ہسپتال کو اپنے لیے اہم جانا ہے۔ جب اسرائیل اور اس کی فوج کو سخت مذمتوں اور دباؤ کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں