ہم حماس کو غزہ کے جبالیا میں دوبارہ قدم جمانے سے روک رہے ہیں: اسرائیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل کے فوجی ترجمان نے ہفتے کے روز کہا، شمالی غزہ کی پٹی میں جبالیا میں کارروائی کرنے والی اسرائیلی افواج حماس کو وہاں اس کی فوجی صلاحیتیں دوبارہ قائم کرنے سے روک رہی ہیں۔

ریئر ایڈمرل ڈینیئل ہاگاری نے رپورٹرز کو بریفنگ کے دوران کہا، "ہم نے گذشتہ ہفتوں میں جبالیا میں حماس کی فوجی صلاحیتوں کی بحالی کی کوششوں کی نشاندہی کی۔ ہم ان کوششوں کو ختم کرنے کے لئے وہاں کارروائی کر رہے ہیں۔"

ہاگاری نے یہ بھی کہا کہ غزہ شہر کے زیتون ضلع میں کام کرنے والی اسرائیلی افواج نے تقریبا 30 فلسطینی مزاحمت کاروں کو ہلاک کر دیا۔

اسرائیل نے ہفتے کے روز غزہ کے جنوبی شہر رفح کے مزید علاقوں میں فلسطینیوں سے کہا کہ وہ انخلا کریں اور اس طرف چلے جائیں جسے وہ المواسی میں ایک توسیع شدہ انسانی علاقہ کہتے ہیں جو اس بات کا مزید اشارہ ہے کہ فوج رفح پر زمینی حملے کے منصوبوں کے ساتھ آگے بڑھ رہی ہے۔

سوشل میڈیا سائٹ ایکس پر ایک پوسٹ میں ایک فوجی ترجمان نے شمالی غزہ کے علاقے جبالیا میں رہائشیوں اور بے گھر افراد اور انکلیو میں 11 دیگر محلوں کے لوگوں سے تقاضہ کیا کہ وہ فوراً غزہ شہر کے مغرب میں واقع مقامات پر چلے جائیں۔

فلسطینی وزارتِ صحت نے بتایا کہ کم از کم 37 فلسطینی جن میں سے 24 کا تعلق وسطی غزہ کے علاقوں سے تھا، انکلیو کے مختلف علاقوں بشمول رفح پر راتوں رات فضائی حملوں میں ہلاک ہو گئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں