ساڑھے چار لاکھ فلسطینی ایک ہفتے میں رفح سے نقل مکانی پرمجبور ہو گئے : اقوام متحدہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

صرف ایک ہفتے کے دوران رفح کے مشرقی حصے کا ٹینکوں سے محاصرہ کرنے کے علاوہ بمباری کر کے اسرائیل نے ساڑھے چار لاکھ فلسطینیوں کو ایک بار پھر بے گھر کرنے کی کامیابی حاصل کر لی ہے۔

یہ ایک ریکارڈ ہے کہ صرف سات ماہ کے اندر اندر اسرائیل کو لاکھوں کی تعداد میں دوسری بار فلسطینیوں کو پورے دھڑلے سے بے گھر کرنے میں کامیاب رہا ہے۔
اہم بات ہے کہ عالمی طاقتیں، عالمی برادری،عالمی ادارے تمام تر انسانی اخلاقیات اور بین الاقوامی قوانین کے باوجود اسرائیل کو روک نہیں سکا۔فلسطینیوں کو محدود وقت میں دوبارہ بے گھر کرنے یانقل مکانی کرانے سے باز رہے۔

اقوام متحدہ کے فلسطینیوں کی بہبود کے لیے قائم ادارے ' اونروا' نے منگل کے روز اس بارے میں سوشل میڈیا پلیٹ فارم ' ایکس ' پر لکھا ہے کہ چھ مئی سے لے کر اب 14 مئی تک ساڑھے چار لاکھ فلسطینی رفح چھوڑنے پر مجبور ہو چکے ہیں۔ تاہم 'اونروا ' نے اس بارے میں ہقین سے کچھ نہیں بتایا ہے کہ ان ساڑھے چار لاکھ فلسطینی کس علاقے میں پناہ کے لیے نکلے ہیں اور انہیں اب کہاں محفوظ ٹھکانہ مل سکے گا؟

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں