یہودی آباد کاروں کی امدادی سامان لانے والے ٹرکوں کی لوٹ مار

ٹرکوں کو راستے میں روک لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی جنگ کو فلسطینیوں کے خلاف جاری رکھنے کے حامی اسرائیلی مظاہرین نے غزہ میں انسانی بنیادوں پر امدادی سامان لے جانے والے ٹرکوں کو روک دیا ۔

اسرائیلی مظاہرین جنگ کو جاری رکھنے کے حامی ہونے کے ساتھ ساتھ غزہ میں فلسطینی عوام پر قحط کی صورت حال بھی مسلط کیے رکھنے کے لیے غزہ کی فوجی ناکہ بندی میں کمی نہیں چاہتے۔ ان مظاہرہن کی اکٹریت ان یہودی آباد کاروں کی ہے جنہیں اسرائیل نے ناجائز اور غیر قانونی طور پر قائم کی گئی یہودی بستیوں میں بسا رکھا ہے۔

ان مظاہرین نے امدادی سامان لانے والے ٹرکوں کو پیر کے روز اس وقت روک کر انسانی بنیادوں پر امدادی کارروائیوں میں رخنہ ڈالا جب اسرائیل نے ایک بار پھر وعدہ کیا تھا کہ وہ امدادی ٹرکوں کو بغیر رکاوٹ کے غزہ تک پہنچنے دے گا۔ نیز یہ کہ اسرائیلی فوجی ناکہ بندی کے باوجود غزہ میں جنگ اور قحط زدہ فلسطینیوں تک خوراک پہنچ سکے گی۔

ایک اطلاع کے مطابق ان جارحانہ سرگرمیوں میں ملوث چار یہودی آباد کاروں کو مقبوضہ مغربی کنارے کے علاقے سے حراست میں لیا گیا ہے۔ ان میں ایک چھوٹا بچہ بھی شامل ہے۔ لیکن تازہ واقعے پر پیر کے روز ایسی کوئی کارروائی نہیں کی گئی ہے۔

امدادی ٹرکوں کو روکنے کی یہ کارروائی ایک اسرائیلی چیک پوائنٹ پر کی گئی ہے۔ اس سلسلے میں بنائی گئی ویڈیو فوٹیجز میں دیکھا جا سکتا ہے کہ یہودی آباد کار امدادی ٹرکوں کو روک کر چڑھے ہوئے ہیں اور خوراک و دیگر امدادی پیکٹ نیچے زمین پر پھینک رہے ہیں۔ گویا یہودی آباد کار خوراک کی لوٹ مار میں بھی ملوث ہیں۔ یوں سڑک کے دونوں طرف یہ سامان پھینکا گیا ہے۔ نیز وہ یہ کام با آسانی اور بغیر روک ٹوک کر رہے ہیں۔ پچھلے ہفتے بھی اس طرح کی کارروائی یہودی آباد کاروں نے کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں