'سعودی عرب زندہ باد!' میرے بیٹے صرف یہیں لڑیں گے: ٹائسن فیوری کے والد جان فیوری

"صرف سعودی عرب ہی ٹائیسن-اوسیک مقابلے کا انعقاد کر سکتا تھا"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

برطانوی باکسنگ چیمپیئن ٹائسن فیوری کے والد نے وعدہ کیا ہے کہ ان کے بیٹے صرف سعودی عرب میں ہی لڑیں گے۔ انہوں نے مملکت کے لوگوں کی مہمان نوازی کی تعریف کی اور یہاں تک کہا وہ ان جیسا بننا چاہتے ہیں۔

جان فیوری نے کہا، "ٹائسن فیوری اور فیوری خاندان صرف سعودی عرب میں دوبارہ لڑیں گے۔ یہیں ہمارا دل ہے، ہمیں اس سے پیار ہے اور لوگ ہم سے پیار کرتے ہیں۔"

ریاض کے بلیوارڈ سٹی میں ایک پرجوش پریس کانفرنس کے دوران آسمان کی طرف ہاتھ اٹھا کر انہوں نے کہا، "سعودی عرب زندہ باد!"

کنگڈم ایرینا میں ہفتہ کو غیر متنازعہ ہیوی ویٹ ورلڈ ٹائٹل کے لیے ٹائسن فیوری کا مقابلہ اولیکسینڈر اوسیک سے ہوگا۔

انہوں نے کہا، "میں بیان نہیں کر سکتا کہ میں اس ملک اور اس کے عوام سے کتنا لطف اندوز ہوتا ہوں۔ اور میں صرف ان جیسا بننا چاہتا ہوں۔۔۔ کیونکہ سعودی عرب کا بدترین آدمی بھی جان فیوری سے بہتر ہے۔"

"برطانوی غدار ہیں، ہیں ناں؟" فیوری نے اس بات کی وضاحت نہیں کی کہ وہ کس کا حوالہ دے رہے تھے اور ان پر 'اپنے بادشاہ' کے خلاف غداری کرنے کا الزام لگایا۔ ٹائسن کے عرفی نام 'خانہ بدوشوں کا بادشاہ' میں بھی بادشاہ آتا ہے۔

"عظیم برطانیہ کو بھول جائیں۔ ہمارا دل، یہ دیکھیں، میرے جسم میں دھڑکتا ہوا دل سعودی عرب میں ہے کیونکہ یہاں ہمارے ساتھ مناسب لوگوں جیسا سلوک کیا جاتا ہے جیسا ہونا چاہیے۔"

انہوں نے یہاں تک کہا کہ برطانیہ میں انہیں کبھی "اچھا محسوس نہیں ہوا" اور چونکہ "وہ چیمپیئن کی حمایت نہیں کر سکے" تو وہ اس سے محروم رہ گئے۔

سعودی عرب گذشتہ کچھ سالوں میں باکسنگ کے عالمی مقابلوں کا مرکز بن گیا ہے اور مقامی اور بین الاقوامی شائقین کے لیے سب سے بڑے مقابلے منعقد کروانے کے لیے حکام نے بھاری سرمایہ کاری کی ہے۔

مملکت کی جنرل انٹرٹینمنٹ اتھارٹی کے سربراہ ترکی بن عبدالمحسن آل الشیخ نے باکسنگ کی اس بحالی کی قیادت کی ہے۔

فیوری سینیئر نے اتھارٹی کے سربراہ کی بہت تعریف کی، "انہوں نے دنیا میں بہترین کام کیا ہے۔" اور مزید کہا کہ صرف سعودی عرب ہی ٹائیسن-اوسیک کی لڑائی منعقد کر سکتا تھا۔

انہوں نے کہا، "اس لڑائی کو ترک آل الشیخ اور سعودی عرب کی عظیم مملکت کے علاوہ کوئی نہیں کروا سکتا تھا۔"

ملک میں گذشتہ مقابلے نے عالمی سطح پر شائقین کی توجہ حاصل کی ہے اور مملکت کو بین الاقوامی باکسنگ کے ایک نئے مقام کی شناخت دی ہے۔

مارچ میں برطانوی ہیوی ویٹ اینتھونی جوشوا نے فرانسس گانوں کو دوسرے راؤنڈ میں ناک آؤٹ کیا۔

فیوری خاندان کے ایک اور رکن ٹامی نے یوٹیوبر سے فائٹر بننے والے جیک پال کو گذشتہ سال درعیہ میں ایک مقابلے میں پوائنٹس کی بنیاد پر شکست دی۔

2022 میں اوسیک نے پوائنٹس پر جدہ میں جوشوا کے خلاف دوبارہ میچ میں کامیابی کے ساتھ اپنے بیلٹ کا دفاع کیا جبکہ لندن سے تعلق رکھنے والے جوشوا یوکرینی کھلاڑی کے خلاف اپنا ٹائٹل دوبارہ جیتنے میں ناکام رہے۔

2019 میں جوشوا نے اینڈی روئز جونیئر کو ریاض کے درعیہ ایرینا میں ایک انتقامی میچ میں شکست دی جب امریکی کھلاڑی نے نیویارک میں برطانوی کو شکست دے کر حیران کر دیا تھا

جدہ میں 2018 میں دونوں برطانوی کھلاڑیوں کے ایک انتقامی میچ کے ساتویں راؤنڈ میں کالم سمتھ نے جارج گرووز کو ناک آؤٹ کر دیا تھا۔

ایک زبانی ہنگامہ آرائی کے دوران ٹائسن کو زخم آنے کے بعد فروری میں ٹائیسن-اوسیک مقابلے میں تاخیر ہوئی تھی لیکن تماشائی اور منتظمین دونوں خوش ہیں کہ باکسنگ کا یہ تماشہ اس ہفتے کے آخر میں منعقد ہو رہا ہے۔

فیوری سینیئر نے عرب نیوز کو بتایا کہ دونوں کھلاڑی اپنی کارکردگی کے عروج پر ہیں اور اس کھیل کے تجربہ کار کھلاڑی ہیں۔ انہوں نے کہا، "یہ ایک زبردست لڑائی ہوگی۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں