اسرائیلی فوجی مراکز پر حزب اللہ کا میزائل حملہ، 60 میزائل داغے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایرانی حمایت یافتہ لبنانی ملیشیا نے کہا ہے کہ اس نے جمعرات کے روز اسرائیلی فوجی پوزیشنوں پر 60 میزائل فائر کر کے حملہ کیا ہے۔ یہ میزائل اسرائیل کی طرف سے گزشتہ رات کی گئی بمباری کے جواب میں فائر کیے گئے ہیں۔ اسرائیل نے بمباری لبنان کے مشرقی حصے میں کی تھی۔

اسرائیل اور حماس کی اتحادی حزب اللہ کے درمیان تقریبا ہر روز لبنان اسرائیل سرحد پر گولہ باری کا تبادلہ ہوتا ہے۔

دو طرفہ جھڑپوں کا یہ سلسلہ سات اکتوبر 2023 سے جاری ہے۔ اس طویل ترین سرحدی جھڑوں کے سلسلے کا آٹھواں ماہ ہو گیا ہے۔ اب تک ان جھڑپوں می لبنان کے 413 لوگ ہلاک ہو چکے ہیں۔

حزب اللہ کے جنگجووں نے میزائل حملے کے دوران 60 سے زائد کائتوشا نامی میزائل فائر کیے ہیں۔ ان میزائلوں کا ہدف اسرائیلی فوج کی گولان کی پہاڑیوں سے جڑی ہوئی مختلف پوزیشنیں تھیں۔ یہ بات حزب اللہ کی طرف سے جاری کیے گئے ایک بیان میں کہی گئی ہے۔

اس سے پچھلی رات اسرائیلی فوج نے بیکا ریجن میں شدید بمباری کی تھی۔ یہ علاقہ مزرقی لبنان میں واقع ہے۔ جوابا حزب اللہ نے بھی اسرائیل کے اندر تک میزائل داغے۔

لبنان کی سرکاری خبر رساں ایجنسی نے بتایا ہے کہ اسرائیلی بمباری سے ایک شہری کچھ زخمی ہو گیا اور اکا دکا جگہوں پر آگ لگ گئی۔ دوسری جانب حزب اللہ سے قریبی ذرائع کا کہنا ہے کہ اسرائیلی بمباری سے حزب اللہ کا ایک فوجی کیمپ بھی نشانہ بنا ہے۔

اسرائیلی فوج کے ترجمان نے بھی تصدیق کی ہے کہ اس کی بمباری بیکا کے علاقے میں تھی۔ یہ سلسلہ وقفے وقفے سے رہتا ہے۔ یاد رہے یہ لبنانی علاقہ شام کی سرحد سے متصل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں